89 . سورہ فاتح الله کا انعام ہے


سورہ  فاتحہ  الله  کا  انعام  ہے  


وَلَـقَدۡ اٰتَيۡنٰكَ سَبۡعًا مِّنَ الۡمَـثَانِىۡ وَالۡـقُرۡاٰنَ الۡعَظِيۡمَ

ترجمہ


 ہم   نے تم کو سات آیتیں عطا کی ہیں جو  بار بارپڑھی جائینگی  اور عظیم قرآن بھی  عطا کیا   ہے

 

 تبصرہ

یہ سات آیتیں جو ہر مقررنماز میں  بار بار پڑھ رہے ہیں سورہ الفتحہ کی آیتیں ہیں. زیادہ تر مفسسریں کا  کہنا ہے کہ یہ  الفاتحہ  سے مراد ہے. امام 

بخاری نے نظرثانی کی حمایت میں دو مستند روایات بیان کی ہیں کہ یہ الفتحہ سے مراد ہے.

 شاندار قرآن کا  قیمتی تحفہ  نبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ان  کے پیروکاروں کو تسلی دینے کے لئے  دیا گیا ہے. مکّہ کے لوگ اور یہودی، ایمان 

والوں   کے نازک اقتصادی حالات کے علاوہ  اور  نبی صلی  اللہ علیہ وسلم کے ساتھ ہی     مکہ  اور اس کے ارد گرد کے لوگوں کو ہراساں کر رہے 

تھے.  ان حالات میں  وہ بہت پریشان تھے، حقیقت میں  ان میں سے کوئی بھی جسمانی اور ذہنی تشدد سے محفوظ نہیں تھا. دوسری طرف، 

قریش، دنیا کی تمام اچھی چیزوں کا لطف اٹھا رہے تھے  اور خوشی اور عیش و آرام کی زندگی گذار رہے. سورہ فاتحہ کا نزول دراصل میں 

مومنوں  کی قسم کی  یاد دہانی کرنا تھی ان کو یہ بات محسوس  کرانی تھی کہ ہم نے آپ کو  بہترین  مال دیا ہے جو دنیا بھر میں جتنا مال ہے اس پر


اس مال کو فوقیت حاصل ہے



Comments