Paradise (Jannat)


One must understand that the Paradise is meant for those who believe in Allah, the Last Day, the Angels, the Scriptures and the Prophets; and spend wealth in love of Allah to relatives ، orphans  ،the needy and to the wayfarer. It is for those also who observe regular worship in form of Salat, Zakat, Fasting and Haj (If afford)  and fulfill covenant (Promises) when they make one, and be patient in adversity and time of stress and who are sincere and who fear Allah.

Allah has described the Paradise in Holy Quran in the following verses.


Surah No. 69, Al Haqqah, Ayats No. 19 to 22

 

فَأَمَّا مَنْ أُوتِيَ كِتَابَهُ بِيَمِينِهِ فَيَقُولُهَاؤُمُ اقْرَؤُوا كِتَابِيهْo

إِنِّي ظَنَنتُ أَنِّي مُلَاقٍ حِسَابِيهْo

فَهُوَ فِي عِيشَةٍ رَّاضِيَةٍo

فِي جَنَّةٍ عَالِيَةٍo

Translation :


 Who will be given his Record in his right hand, will say: " You can see my Record and read it. " I was certain that I shall be getting my Account!" So he will be in a pleasant life, and in an excellent Paradise.

 




 Surah No. 2 , Al Baqar , Ayat No.25

وَبَشِّرِ الَّذِين آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ أَنَّ لَهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ كُلَّمَا رُزِقُواْ مِنْهَا مِن ثَمَرَةٍ رِّزْقاً قَالُواْ هَـذَا الَّذِي رُزِقْنَا مِن قَبْلُ وَأُتُواْ بِهِ مُتَشَابِهاً وَلَهُمْ فِيهَا أَزْوَاجٌ مُّطَهَّرَةٌ وَهُمْ فِيهَا خَالِدُونَ


Translation :


Give glad tidings to those who believe and do good work.They will be in the Gardens, beneath which rivers flow. Every time they are fed with fruits, they say: " this is what we were fed before, and there they will have pure companions ( holy); and they abide there (forever).


Surah No.4 , An Nisa , Ayat No.57


وَالَّذِينَ آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ سَنُدْخِلُهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا لَّهُمْ يهَا 

     أَزْوَاجٌ مُّطَهَّرَةٌ وَنُدْخِلُهُمْ ظِـلاًّ ظَلِيلاً


Translation :


But those who believe and do good deeds, We shall soon admit them to the Gardens, with rivers flowijinng beneath,- their eternal home: They shall have their companions pure and holy: We shall keep them in shades, cool and ever deepening.



Surah No.18 , A Kahf , Ayats No.30 &31


oإِنَّ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ إِنَّا لَا نُضِيعُ أَجْرَ مَنْ أَحْسَنَ عَمَلًا

أُوْلَئِكَ لَهُمْ جَنَّاتُ عَدْنٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهِمُ الْأَنْهَارُ يُحَلَّوْنَ فِيهَا مِنْ أَسَاوِرَ مِن ذَهَبٍ وَيَلْبَسُونَ ثِيَابًا خُضْرًا مِّن سُندُسٍ وَإِسْتَبْرَقٍ مُّتَّكِئِينَ فِيهَا عَلَى الْأَرَائِكِ

o نِعْمَ الثَّوَابُ وَحَسُنَتْ مُرْتَفَقًا


Translation :


For those who believe and do good works, We shall not let go waste their reward, not a single righteous deed. Gardens of Eden will be for them; Rivers will flow beneath them ; they will be decorated there with bracelets of gold, and they will wear green garments of fine silk and heavy brocade: They will rest there on raised thrones. How good will be their reward ! How beautiful a couch to recline on !


Surah No.22 , Al Hajj , Ayat No.23


إِنَّ اللَّهَ يُدْخِلُ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ يُحَلَّوْنَ فِيهَا مِنْ أَسَاوِرَ مِن ذَهَبٍ وَلُؤْلُؤًا وَلِبَاسُهُمْ فِيهَا حَرِيرٌ


Translation :


Allah will admit those to the Paradise who believe and do righteous deed, beneath which rivers flow: they shall be decorated there, with bracelets of gold and pearls; and their garments will be of silk.



Surah No.37 , As Saaffaat , Ayats No.40 to 57


oفَوَاكِهُ وَهُم مُّكْرَمُونَ o لَهُمْ رِزْقٌ مَّعْلُومٌ o إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ

يُطَافُ عَلَيْهِم بِكَأْسٍ مِن مَّعِينٍ oعَلَى سُرُرٍ مُّتَقَابِلِينَ oفِي جَنَّاتِ النَّعِيمِ

وَعِنْدَهُمْ قَاصِرَاتُ o لَا فِيهَا غَوْلٌ وَلَا هُمْ عَنْهَا يُنزَفُونَ o بَيْضَاء لَذَّةٍ لِّلشَّارِبِينَ

oفَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَى بَعْضٍ يَتَسَاءلُونَ oكَأَنَّهُنَّ بَيْضٌ مَّكْنُونٌ o الطَّرْفِ عِينٌ

o يَقُولُ أَئِنَّكَ لَمِنْ الْمُصَدِّقِينَ o قَالَ قَائِلٌ مِّنْهُمْ إِنِّي كَانَ لِي قَرِينٌ

o قَالَ هَلْ أَنتُم مُّطَّلِعُونَ o أَئِذَا مِتْنَا وَكُنَّا تُرَابًا وَعِظَامًا أَئِنَّا لَمَدِينُونَ

o قَالَ تَاللَّهِ إِنْ كِدتَّ لَتُرْدِينِ o فَاطَّلَعَ فَرَآهُ فِي سَوَاء الْجَحِيمِ

o وَلَوْلَا نِعْمَةُ رَبِّي لَكُنتُ مِنَ الْمُحْضَرِينَ


Translation :


For the sincere and devoted servants of Allah,- there is a known Sustenance. They will get fruits of their labour in the Garden of Delight and where they shall reside with honour and dignity, In Gardens they will be Facing each other on Thrones : They will be served a Cup from a clear-flowing fountain, filled with a Drink, Crystal-white and of a taste delicious., The Drink will be Free from headiness; they will not suffer intoxication. And besides this there will be chaste women, controlling their glances, with big eyes, as they were like (delicate) closely guarded eggs .

Then they will turn to one another and question each other. One of them will start the talk and say: "I had an intimate companion (on the earth), "Who used to say,  Do you really believe, when we die and become dust and bones, shall we receive rewards and punishments?’"(A voice) said: "Would you like to see him, you look down?" He will look down and see him in the blazing Fire. He will say : "By Allah! you would have nearly ruined me! "Had it not been the favour of my Lord, I should certainly have been among those with you in Hell !


Surah No. 38 , Suad , Ayats No.50 to 52


o جَنَّاتِ عَدْنٍ مُّفَتَّحَةً لَّهُمُ الْأَبْوَابُ oهَذَا ذِكْرٌ وَإِنَّ لِلْمُتَّقِينَ لَحُسْنَ مَآبٍ

o مُتَّكِئِينَ فِيهَا يَدْعُونَ فِيهَا بِفَاكِهَةٍ كَثِيرَةٍ وَشَرَابٍ

oوَعِندَهُمْ قَاصِرَاتُ الطَّرْفِ أَتْرَابٌ


Translation :


This is a Message for the righteous, It is a beautiful Place of (Final) Return, These are the permanent Gardens which are forever, whose doors will be open to them;Therein they will recline (at ease): Therein they can call (at pleasure) fruits in abundance, and (delicious) drink; And there will be chaste women controlling their glances, they will be companions of equal age.



Surah No.39 , Az Zumar , Ayats No.73 & 74



وَسِيقَ الَّذِينَ اتَّقَوْا رَبَّهُمْ إِلَى الْجَنَّةِ زُمَرًا حَتَّى إِذَا جَاؤُوهَا وَفُتِحَتْ أَبْوَابُهَا وَقَالَ وَقَالُوا الْحَمْدُ لِلَّهِ
لَهُمْ خَزَنَتُهَا سَلَامٌ عَلَيْكُمْ طِبْتُمْ فَادْخُلُوهَا خَالِدِينَ
o الَّذِي صَدَقَنَاوَعْدَهُ وَأَوْرَثَنَا الْأَرْضَ نَتَبَوَّأُ مِنَ الْجَنَّةِ حَيْثُ نَشَاء فَنِعْمَ أَجْرُ الْعَامِلِينَ


Translation :


Those who feared Allah will be led to the Paradise in groups :When they arrive there; its gates will be opened; and its keepers will say: "Peace be upon you! you have done well! You enter here, to reside forever."They will say: "Praise be to Allah, Who has truly fulfilled His Promise to us, and has given us (this) land in heritage: We can dwell in the Garden as we will: how excellent a reward for those who do good deeds .



Surah No.44 , Ad Dukhan , Ayats No.51 to 57


يَلْبَسُونَ مِن سُندُسٍ oفِي جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ oإِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي مَقَامٍ أَمِينٍ

يَدْعُونَ فِيهَا oكَذَلِكَ وَزَوَّجْنَاهُم بِحُورٍ عِينٍ oوَإِسْتَبْرَقٍ مُّتَقَابِلِينَ

لَا يَذُوقُونَ فِيهَا الْمَوْتَ إِلَّا الْمَوْتَةَ الْأُولَى وَوَقَاهُمْ oبِكُلِّ فَاكِهَةٍ آمِنِينَ

oفَضْلًا مِّن رَّبِّكَ ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ oعَذَابَ الْجَحِيمِ


Translation :


The Righteous will be in a protected place, In perfect place of Gardens and Springs;Dressed in fine silk and in rich brocade, they will face each other; We shall wed them to beautiful companions having big lustrous eyes.There they can call for every kind of fruit. They will never taste Death, except the first death (of this world); and He will protect them from the Penalty of the Blazing Fire,- As a Gift from your Lord ! that will be the supreme achievement!



Surah No. 47 , Mohammad , Ayat No.15


مَثَلُ الْجَنَّةِ الَّتِي وُعِدَ الْمُتَّقُونَ فِيهَا أَنْهَارٌ مِّن مَّاء غَيْرِ آسِنٍ وَأَنْهَارٌ مِن لَّبَنٍ لَّمْ يَتَغَيَّرْ طَعْمُهُ وَأَنْهَارٌ مِّنْ خَمْرٍ لَّذَّةٍ لِّلشَّارِبِينَ وَأَنْهَارٌ مِّنْ عَسَلٍ مُّصَفًّى وَلَهُمْ فِيهَا مِن كُلِّ الثَّمَرَاتِ وَمَغْفِرَةٌ مِّن رَّبِّهِمْ كَمَنْ هُوَ خَالِدٌ فِي النَّارِ وَسُقُوا مَاء حَمِيمًا فَقَطَّعَ أَمْعَاءهُمْ


Transaltion :



Here is a description of the Paradise which is promised to the righteous : in it, there are rivers of water the taste of which never changes; rivers of milk the taste of which never changes; rivers of wine, a joy to those who drink; and rivers of honey pure and clear. For them all kinds of fruits are there ; and forgiving from their Allah. Are these people better or the people of Hell who shall abide there for ever in the Fire, and given to drink, boiling water, so that it cuts up their intestine (to pieces)?



Surah At – Tur ,No.52 ,Ayats No.17 ti 27


فَاكِهِينَ بِمَا آتَاهُمْ رَبُّهُمْ وَوَقَاهُمْ رَبُّهُمْ oإِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي جَنَّاتٍ وَنَعِيمٍ

oكُلُوا وَاشْرَبُوا هَنِيئًا بِمَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ oعَذَابَ الْجَحِيمِ

وَالَّذِينَ آمَنُوا وَاتَّبَعَتْهُمْ o مُتَّكِئِينَ عَلَى سُرُرٍ مَّصْفُوفَةٍ وَزَوَّجْنَاهُم بِحُورٍ عِينٍ

رِّيَّتُهُم بِإِيمَانٍ أَلْحَقْنَا بِهِمْ ذُرِّيَّتَهُمْ وَمَا أَلَتْنَاهُم مِّنْ عَمَلِهِم مِّن شَيْءٍ كُلُّ

oوَأَمْدَدْنَاهُم بِفَاكِهَةٍ وَلَحْمٍ مِّمَّا يَشْتَهُونَ o امْرِئٍ بِمَا كَسَبَ رَهِينٌ

وَيَطُوفُ عَلَيْهِمْ غِلْمَانٌ لَّهُمْ o يَتَنَازَعُونَ فِيهَا كَأْسًا لَّا لَغْوٌ فِيهَا وَلَا تَأْثِيمٌ

oوَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَى بَعْضٍ يَتَسَاءلُونَ oكَأَنَّهُمْ لُؤْلُؤٌ مَّكْنُونٌ

oفَمَنَّ اللَّهُ عَلَيْنَا وَوَقَانَا عَذَابَ السَّمُومِ oقَالُوا إِنَّا كُنَّا قَبْلُ فِي أَهْلِنَا مُشْفِقِينَ


Translation :


The Righteous will be in Paradise ,and in Happiness, Enjoying the Paradise which their Allah will give to them, and their Allah shall save them from the Penalty of the Fire. "You Eat and drink, with beneficial and healthy diet, because of your (good) deeds."They will rest (with ease) on Thrones (of dignity) arranged in ranks; and We shall Wed them to Companions, with beautiful big and lustrous eyes. And those who believe, and whose families will follow them in Faith,-We will reunite their families. We shall not deprive them (the fruits) of their works: Each individual is pledged for his good deeds. And We shall provide them, fruits and meat - and anything they shall desire. They shall exchange, with one another, a (loving) cup free of all taint of ill. Youths as handsome as Pearls shall attend them there. While talking to one another they will say to each other,when we were living in our houses we were worried and fearful about our fate. But Allah has been gracious to us and has saved us from the Penalty of the Scorching Wind.



Surah No. 55 , Ar Rahman , Ayats No.46 to 78


oذَوَاتَا أَفْنَانٍ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oمَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّهِ جَنَّتَانِ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oفِيهِمَا عَيْنَانِ تَجْرِيَانِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oفِيهِمَا مِن كُلِّ فَاكِهَةٍ زَوْجَانِ

o مُتَّكِئِينَ عَلَى فُرُشٍ بَطَائِنُهَا مِنْ إِسْتَبْرَقٍ وَجَنَى الْجَنَّتَيْنِ دَانٍ

فِيهِنَّ قَاصِرَاتُ الطَّرْفِ لَمْ يَطْمِثْهُنَّ o فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

كَأَنَّهُنَّ الْيَاقُوتُ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oإِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ

oهَلْ جَزَاء الْإِحْسَانِ إِلَّا الْإِحْسَانُ o فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ o وَالْمَرْجَانُ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ o وَمِن دُونِهِمَا جَنَّتَانِ o فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفِيهِمَا عَيْنَانِ نَضَّاخَتَانِ o فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ o مُدْهَامَّتَانِ

o فِيهِمَا فَاكِهَةٌ وَنَخْلٌ وَرُمَّانٌ o فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفِيهِنَّ خَيْرَاتٌ حِسَانٌ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oحُورٌ مَّقْصُورَاتٌ فِي الْخِيَامِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

o لَمْ oيَطْمِثْهُنَّ إِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oمُتَّكِئِينَ عَلَى رَفْرَفٍ خُضْرٍ وَعَبْقَرِيٍّ حِسَانٍ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oيَطْمِثْهُنَّ إِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

تَبَارَكَتَبَارَكَ اسْمُ رَبِّكَ ذِي الْجَلَالِ وَالْإِكْرَامِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ


Translation :


For those person who fear in standing before their Lord, there will be two Gardens- Which of the favours of your Lord will you then deny?- (Trees) of spreading branches ;-Which of the favours of your Lord will you then deny?-In them ,will be two free flowing Springs; Which of the favours of your Lord will you then deny?- In both of them will be Fruits of two kinds. Which of the favours of your Lord will you then deny? They will recline on Carpets, whose inner linings will be of rich brocade and the bunches of Fruit will be hanging (and easy of reach). Which of the favours of your Lord will you then deny? In them will be females of modest gaze, whom no man or Jinn has touched them before ;- Which of the favours of your Lord will you then deny?- Like Rubies and coral.Which of the favours of your Lord will you then deny? Is there any Reward of Goodness - other than Good? Which of the favours of your Lord will you then deny? And besides these two, there are two other Gardens,- Which of the favours of your Lord will you then deny?-Dense and Dark-green. Which of the favours of your Lord will you then deny? In them, will be two Springs gushing out water in continuous abundance: Which of the favours of your Lord will you then deny? In them will be Fruits, and dates and pomegranates: Which of the favours of your Lord will you then deny? In them will be fair Companions, good and beautiful;- Which of the favours of your Lord will you then deny?- Companions stationed in pavilions;- Which of the favours of your Lord will you then deny?- Whom no man or Jinn has touched before ;- Which of the favours of your Lord will you then deny?-Those men will be reclining on green Cushions and rich Carpets of beauty. Which of the favours of your Lord will you then deny? Blessed be the name of your Lord, full of Majesty, Bounty and Honour.

                         


Surah No.56 , Waqiah , Ayats No.7 to 40


وَأَصْحَابُ oفَأَصْحَابُ الْمَيْمَنَةِ مَا أَصْحَابُ الْمَيْمَنَةِoوَكُنتُمْ أَزْوَاجًا ثَلَاثَةً

oأُوْلَئِكَ الْمُقَرَّبُونَ oوَالسَّابِقُونَ السَّابِقُونَ oلْمَشْأَمَةِ مَا أَصْحَابُ الْمَشْأَمَةِ

oوَقَلِيلٌ مِّنَ الْآخِرِينَ oثُلَّةٌ مِّنَ الْأَوَّلِينَ o فِي جَنَّاتِ النَّعِيمِ

يَطُوفُ عَلَيْهِمْ oمُتَّكِئِينَ عَلَيْهَا مُتَقَابِلِينَ oعَلَى سُرُرٍ مَّوْضُونَةٍ

لَا يُصَدَّعُونَ عَنْهَا o بِأَكْوَابٍ وَأَبَارِيقَ وَكَأْسٍ مِّن مَّعِينٍ o وِلْدَانٌ مُّخَلَّدُونَ

oوَلَحْمِ طَيْرٍ مِّمَّا يَشْتَهُونَ oوَفَاكِهَةٍ مِّمَّا يَتَخَيَّرُونَ oوَلَا يُنزِفُونَ

o جَزَاء بِمَا كَانُوا يَعْمَلُونَ oكَأَمْثَالِ اللُّؤْلُؤِ الْمَكْنُونِ oوَحُورٌ عِينٌ

وَأَصْحَابُ الْيَمِينِ o إِلَّا قِيلًا سَلَامًا سَلَامًا oلَا يَسْمَعُونَ فِيهَا لَغْوًا وَلَا تَأْثِيمًا

oوَطَلْحٍ مَّنضُودٍ oفِي سِدْرٍ مَّخْضُودٍ oمَا أَصْحَابُ الْيَمِينِ

oلَّا مَقْطُوعَةٍ وَلَا مَمْنُوعَةٍ o وَفَاكِهَةٍ كَثِيرَةٍ oوَمَاء مَّسْكُوبٍ oوَظِلٍّ مَّمْدُودٍ

o عُرُبًا أَتْرَابًا o فَجَعَلْنَاهُنَّ أَبْكَارًا o إِنَّا أَنشَأْنَاهُنَّ إِنشَاء o وَفُرُشٍ مَّرْفُوعَةٍ

oوَثُلَّةٌ مِّنَ الْآخِرِينَ oثُلَّةٌ مِّنَ الْأَوَّلِينَ oلِّأَصْحَابِ الْيَمِينِ



Translation :



And you shall be sorted out into three catagories.Those on the Right Hand ( how happy) will be those on the Right Hand? And those on the Left Hand,-( how unlucky) will be those on the Left Hand? And those Foremost (in Faith) will be Foremost (in the Hereafter). Such people will be Nearest to Allah:(residing) In Gardens of Bliss: A good number of people from earlier generation and few from later times. (They will be) on Thrones covered (with gold and precious stones), Reclining on them, facing each other. They will be served by youths of perpetual (freshness), With goblets, beakers, and cups (filled) with the (liquid) from clear-flowing fountains: They will not receive after-ache and they will not suffer intoxication:They will get any fruit, which they may select: And the flesh of fowls, that they may desire. And (there will be) Companions with beautiful, big, and lustrous eyes,- Like hidden Pearls well-guarded. A Reward for the good deeds of their past (life). They will not hear any abusive language or sinful speech other than the saying, "Peace! Peace"

The Companions of the Right Hand,-( How Lucky ) will be the Companions of the Right Hand? (They will be) among Lote-trees without thorns, Among Talh trees with flowers (or fruits) piled one above another,- They will be in shade long-extended, Water flowing constantly, And fruit in abundance. Whose season is not limited, nor (supply) is not restricted , And on Thrones (of Dignity), raised high. We have created (their Companions) of special creation. And made them virgin and pure , - Beloved (by nature), equal in age,- for the Companions of the Right Hand. A (goodly) number from those of earlier generation, And a (goodly) number from those of later times.

   

Comments :


Special creation of companions (females) for those people who will be in Paradise is reference to those women who are righteous and doing good deeds in this world. They will not only be allowed to enter Heaven but will also be reunited with their husbands, provided they are also in the Paradise. They will be then wed with their earlier husbands . This signifies the virtuous women of the world, who will enter Paradise on the basis of their faith and good works. Allah will make them young no matter how aged they might have died in the world; will make them beautiful whether or not they were beautiful in the world; and will make them virgins whether they died virgins in the world or after bearing children. If their husbands also entered Paradise with them, they would be joined with them, otherwise AIIah will wed them to another dweller in Paradise. This very explanation of this verse has been reported from the Holy Prophet (upon whom be peace) in several Ahadith. According to Shama il Tirmidhi, an old woman requested the Holy Prophet to pray for her admission to Paradise. The Holy Prophet replied: "No old woman will enter Paradise." Hearing this the woman went back crying. Thereupon the Holy Prophet said to the people: "Tell her that she will not enter Paradise as an old woman, for Allah says: `We shall create them anew and make them virgins'." Ibn Abi Hatim has related, on the authority of Hadrat Salamah bin Yazid, that he heard the Holy Prophet ( upon whom be peace) explain this verse, thus: "This implies the women of the world; whether they died virgins or married." Tabarani contains a lengthy tradition related from Hadrat Umm Salamah according to which she asked the Holy Prophet the meaning of the several references in the Qur'an to the women of Paradise. In answer, he explained this very verse and said: "These are the women who died as aged and decayed women, with sticky eyes and gray hair; alter this old age Allah will again make them young and virgins." Hadrat Umm Salamah asked: "If a woman had several husbands in the world, one after the other, to whom will she belong in Paradise ?'' The Holy Prophet replied "She will he asked to make her own choice, and she will choose the one who had the best moral character. She will say: O my Lord, make me his wife, for he was the best in his conduct and dealings with me. O Umm Salamah, good moral conduct has carried off all the good of this world and the Hereafter."

 

(The above comments are confirmed by many Ahadis as referred in Tafhimul Quran )


Surah No. 76 , Al Insaan (Ad Dahar) , Ayats No.12 to 22


مُتَّكِئِينَ فِيهَا عَلَى الْأَرَائِكِ لَا يَرَوْنَ فِيهَا oوَجَزَاهُم بِمَا صَبَرُوا جَنَّةً وَحَرِيرًا

oوَدَانِيَةً عَلَيْهِمْ ظِلَالُهَا وَذُلِّلَتْ قُطُوفُهَا تَذْلِيلًا oشَمْسًا وَلَا زَمْهَرِيرًا

قَوَارِيرَ مِن فِضَّةٍ oوَيُطَافُ عَلَيْهِم بِآنِيَةٍ مِّن فِضَّةٍ وَأَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَارِيرَا

وَيُسْقَوْنَ فِيهَا o قَوَارِيرَ مِن فِضَّةٍ قَدَّرُوهَا تَقْدِيرًا oوَأَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَارِيرَا

وَيَطُوفُ عَلَيْهِمْ oعَيْنًا فِيهَا تُسَمَّى سَلْسَبِيلًا oكَأْسًا كَانَ مِزَاجُهَا زَنجَبِيلًا

وَإِذَا رَأَيْتَ ثَمَّ رَأَيْتَ oوِلْدَانٌ مُّخَلَّدُونَ إِذَا رَأَيْتَهُمْ حَسِبْتَهُمْ لُؤْلُؤًا مَّنثُورًا

عَالِيَهُمْ ثِيَابُ سُندُسٍ خُضْرٌ وَإِسْتَبْرَقٌ وَحُلُّوا أَسَاوِرَ مِن oنَعِيمًا وَمُلْكًا كَبِيرًا

إِنَّ هَذَا كَانَ لَكُمْ جَزَاء وَكَانَ سَعْيُكُم مَّشْكُورًا oفِضَّةٍ وَسَقَاهُمْ رَبُّهُمْ شَرَابًا طَهُورًا


Translation :


And because they were patient and constant, He will reward them with Paradise and (garments of) silk. Reclining in the paradise on raised thrones, they will neither feel excessive heat nor excessive cold. And the shades of the Garden will come low over them, and the bunches of fruit will hang low . And amongst them will go round vessels of silver and goblets of crystal,- Crystal-clear, made of silver: All will filled up carefully. And they will be given to drink a Cup of Wine mixed with Zanjabil,- A fountain in Paradise,called Salsabil. And round about them will be youths of never ending freshness to serve : They are like scattered Pearls. And when you look around, you will see a Delightful and a magnificent Kingdom. Upon them will be green Garments of fine silk and heavy brocade, and they will be

 dressed with Bracelets of silver; and their Lord will give them to drink a Wine Pure and Holy. "Verily this is a Reward for you, and your Endeavour is accepted and recognised."



Surah No.88 , Al Ghashia , Ayats No.8 to 16


o فِي جَنَّةٍ عَالِيَةٍ o لِسَعْيِهَا رَاضِيَةٌ o وُجُوهٌ يَوْمَئِذٍنَّاعِمَةٌ

o فِيهَا سُرُرٌمَّرْفُوعَةٌ o فِيهَا عَيْنٌ جَارِيَةٌ o لَّاتَسْمَعُ فِيهَا لَاغِيَةً

o وَزَرَابِيُّ مَبْثُوثَةٌ o وَنَمَارِقُ مَصْفُوفَةٌ o وَأَكْوَابٌ مَّوْضُوعَةٌ


Translation :


On that day some faces will be calm, Glad for their past effort , In a high profile garden. They will not hear any idle speech, Wherein is a gushing spring , Wherein are raised couches And goblets placed on a stand And cushions spread systematically And silken carpets spread.

 


Surah No. 3, Al Imraan, Ayat No. 133


وَسَارِعُواْ إِلَى مَغْفِرَةٍ مِّن رَّبِّكُمْ وَجَنَّةٍ عَرْضُهَا السَّمَاوَاتُ وَالأَرْضُ أُعِدَّتْ

 لِلْمُتَّقِينَ


Translation :


Be quick in the race for forgiveness from your Lor+d and for a Paradise which is as wide as the whole heavens and the earth, prepared for the righteous.



Surah No. 3, Al Imraan, Part of Ayat No. 185


نَّمَا تُوَفَّوْنَ أُجُورَكُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ فَمَن زُحْزِحَ عَنِ النَّارِ وَأُدْخِلَ الْجَنَّةَ فَقَدْ فَازَ

o وَما الْحَيَاةُ الدُّنْيَا إِلاَّ مَتَاعُ الْغُر

Translation :


And only on the Day of Judgement, you shall be paid in your full. Then whosoever is saved from the Fire and admitted in Paradise will be successful : the life of this world and its goods are deceptive.


.  
 
 Surah No. 9, At Taubah, Ayat No. 72
 

وَعَدَ اللّهُ الْمُؤْمِنِينَ وَالْمُؤْمِنَاتِ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا وَمَسَاكِنَ طَيِّبَةً فِي جَنَّاتِ عَدْنٍ وَرِضْوَانٌ مِّنَ اللّهِ أَكْبَرُ ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ

 

Translation :


Allah has promised the men and women of believers, the Gardens under which rivers flow to dwell therein forever, and beautiful mansions in Gardens of 'Adn (Eden Paradise). But the greatest favour is the Good Pleasure of Allah. That is the supreme success.



Surah No. 29, Al Ankaboot, Ayat No. 58


وَالَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَنُبَوِّئَنَّهُم مِّنَ الْجَنَّةِ غُرَفًا تَجْرِي مِن تَحْتِهَا

o الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا نِعْمَ أَجْرُ الْعَامِلِينَ

 
Translation :


Those who believe and do righteous good deeds, We will give to them tall buildings in Paradise to reside, beneath which rivers flow. They will live therein for ever ; it is an excellent reward for those who do good !



Surah No. 36, Al Yasin, Ayat No. 55 to 57


هُمْ وَأَزْوَاجُهُمْ فِي ظِلَالٍ o إِنَّ أَصْحَابَ الْجَنَّةِ الْيَوْمَ فِي شُغُلٍ فَاكِهُونَ

o لَهُمْ فِيهَا فَاكِهَةٌ وَلَهُم مَّا يَدَّعُونَ o عَلَى الْأَرَائِكِ مُتَّكِؤُونَ


Translation :


Verily, those who are in the Paradise this Day, will be busy with joyful things.

They and their wives will be in pleasant shade, reclining on thrones.

They will have fruits (of all kinds) and they shall have all that, whatever they ask.


Surah No. 51, Al Zariat, Ayats No. 15 to 19



آخِذِينَ مَا آتَاهُمْ رَبُّهُمْ إِنَّهُمْ كَانُوا قَبْلَ o إِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ

وَبِالْأَسْحَارِ هُمْ o كَانُوا قَلِيلًا مِّنَ اللَّيْلِ مَا يَهْجَعُونَo ذَلِكَ مُحْسِنِينَ

o وَفِي أَمْوَالِهِمْ حَقٌّ لِّلسَّائِلِ وَالْمَحْرُومِ o يَسْتَغْفِرُونَ

 
Translation :


Those who were the Righteous, they will be in the Gardens and Springs (Paradise), Taking pleasure in the things which their Lord gives them, because before they lived a good life. They used to sleep but little in the night. And in the hours of early dawn they used to pray for Forgiveness; And in their wealth, the beggar and the outcast had due share.



Surah No. 57, Al Hadeed, Ayat No. 12


يَوْمَ تَرَى الْمُؤْمِنِينَ وَالْمُؤْمِنَاتِ يَسْعَى نُورُهُم بَيْنَ أَيْدِيهِمْ وَبِأَيْمَانِهِم بُشْرَاكُمُ

o الْيَوْمَ جَنَّاتٌ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ

 
Translation :

 
On the Day you will see (O' Mohammad) for the believing men and the believing women their light running forward before them and by their right hands. Glad news for you this Day! for them Gardens under which rivers flows (Paradise), therein they will be forever! Truly, this is the greatest success!



Surah No. 70, Al Ma'arij, Ayats No. 23 to 29 and from 32 to 35


o وَالَّذِينَ فِي أَمْوَالِهِمْحَقٌّ مَّعْلُومٌ o الَّذِينَ هُمْ عَلَى صَلَاتِهِمْ دَائِمُونَ

وَالَّذِينَ هُم مِّنْ عَذَابِ o وَالَّذِينَ يُصَدِّقُونَبِيَوْمِ الدِّينِ o لِّلسَّائِلِ وَالْمَحْرُومِ

وَالَّذِينَ هُمْ لِفُرُوجِهِمْ o إِنَّ عَذَابَ رَبِّهِمْ غَيْرُ مَأْمُونٍ o رَبِّهِم مُّشْفِقُونَ

o حَافِظُونَ

o وَالَّذِينَ هُم بِشَهَادَاتِهِمْ قَائِمُونَ o وَالَّذِينَ هُمْ لِأَمَانَاتِهِمْ وَعَهْدِهِمْ رَاعُونَ

o أُوْلَئِكَ فِي جَنَّاتٍ مُّكْرَمُونَ o وَالَّذِينَ هُمْ عَلَىصَلَاتِهِمْ يُحَافِظُونَ


Translation :

Those who remain constant in their Salat (prayers); And those in whose wealth there is a specific share for the beggar, and for the unlucky who has lost his property and wealth, (deprived off his means of living ); And those who believe in the Day of Judgement, And those who fear the punishment of their Lord, In fact, the punishment of their Lord is that before which none can feel secure, And those who guard their chastity.

And those who keep their trusts and covenants (Promises); And those who stand firm in their witnesses ; And those who guard their Salat (prayers) well, they shall be in the Gardens (Paradise) and honoured.


Surah No. 78, An Nabaa, Ayats No. 31 to 34


o وَكَأْسًا دِهَاقًا o وَكَوَاعِبَ أَتْرَابًا o حَدَائِقَ وَأَعْنَابًا o إِنَّ لِلْمُتَّقِينَ مَفَازًا


Translation :


In fact ! only the righteous will be successful. (For them) The Gardens enclosed, and Grape-vines ;(And) Companions (women) of Equal Age; And the Cups over flowing.


Surah No. 83, Al Mutaffifeen, Ayats No. 22 to 28


تَعْرِفُ فِي وُجُوهِهِمْ o عَلَىالْأَرَائِكِ يَنظُرُونَ o إِنَّ الْأَبْرَارَ لَفِي نَعِيمٍ

خِتَامُهُ مِسْكٌ وَفِي ذَلِكَ o يُسْقَوْنَ مِن رَّحِيقٍ مَّخْتُومٍ o نَضْرَةَ النَّعِيمِ

o عَيْنًايَشْرَبُ بِهَا الْمُقَرَّبُونَ o وَمِزَاجُهُ مِن تَسْنِيمٍ o فَلْيَتَنَافَسِ الْمُتَنَافِسُونَ


Translation :


In fact , the pious will be in Paradise. On thrones, looking at all things. You will see on their faces the brightness of delight. They will be served a drink of pure sealed wine. That wine will have the smell of Musk (Mushk) and for this who wants to aim, let him aim. (That wine) will be mixed with Tasneem. Those nearest to Allah will drink from the spring, flowing from the height.




Surah No. 4, An Nisa, Ayat No. 31


إِن تَجْتَنِبُواْ كَبَآئِرَ مَا تُنْهَوْنَ عَنْهُ نُكَفِّرْ عَنكُمْ سَيِّئَاتِكُمْ وَنُدْخِلْكُم مُّدْخَلاً كَرِيمًا


Translation :


If you avoid the Big Sins from which you are prohibited, We shall forgive your (small) sins, and admit you to Paradise as a Noble Entrance.



If you have any feedback please revert to:  arifrk43@gmail.com



@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@@

************************************************************************************

                                       

                 ( بَہِشت ( جنّت 


ہر شخص کو یہ یاد رکھنا چاہئے کہ جنّت ان لوگوں کو ملے گی جو لوگ اللہ پر، قیامت کے دن پر،

 فرشتوں، صحیفوں  اور انبیاء  پر یقین رکھتے ہیں – ایسے لوگ جو اللہ کی محبّت میں رشتےداروں، یتیموں،

 مسکینوں، اور ضرورت مندوں پر اپنی دولت خرچ کرتے ہیں  جنّت ان لوگوں کے لئے بھی ہے جو نماز

ذکٰو ۃ ،  روزہ  اور حج ( اگر استطاعت ہو تو ) کی شکل میں با قائدہ عبادت کرتے ہیں – عہد کو پورا کرتے

 ہیں اور مصیبت اور پریشانی میں صبر کرتے ہیں  

                                                        اللہ تعالٰی    نے قرآن مجید میں جنّت کومندرجہ ذیل آیات میں بیان کیا ہے    


 سورہ نمبر ٦٩، ال حقّہ،  آیات نمبر ١٩ سے ٢٢  

 فَأَمَّا مَنْ أُوتِيَ كِتَابَهُ بِيَمِينِهِ فَيَقُولُهَاؤُمُ اقْرَؤُوا كِتَابِيهْ

إِنِّي ظَنَنتُ أَنِّي مُلَاقٍ حِسَابِيهْo

فَهُوَ فِي عِيشَةٍ رَّاضِيَةٍo

فِي جَنَّةٍ عَالِيَةٍo

 


ترجمہ  :

 اس وقت جب نامے اعمال اس کے سیدھے ہاتھ میں دیا جائیگا وہ کہے گا  " لو دیکھو پڑھو ، میرا نامہ

 اعمال " میں سمجھتا تھا کہ مجھے ضرور میرا حساب ملنے والا ہے " پھر وہ دل پسند عیش ہوگا اور عالی مقام

  جنّت میں ہوگا 

 

 سورہ نمبر ٢، البقر ، آیت نمبر ٢٥


وَبَشِّرِ الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡا وَ عَمِلُوا الصّٰلِحٰتِ اَنَّ لَهُمۡ جَنّٰتٍ تَجۡرِىۡ مِنۡ تَحۡتِهَا الۡاَنۡهٰرُ‌ؕ ڪلَّمَا رُزِقُوۡا مِنۡهَا مِنۡ ثَمَرَةٍ رِّزۡقًا ‌ۙ قَالُوۡا هٰذَا الَّذِىۡ رُزِقۡنَا مِنۡ قَبۡلُ وَاُتُوۡا بِهٖ مُتَشَابِهًا ‌ؕ وَلَهُمۡ فِيۡهَآ اَزۡوَاجٌ مُّطَهَّرَةٌ ‌ۙ وَّهُمۡ فِيۡهَا خٰلِدُوۡنَ‏

  

ترجمہ  :


اور جو لوگ ایمان لائیں اور اعمال اچھے کرلیں ، انہیں خوشخبری دے دو کہ ان کے لئے ایسے باغ

 ہیں جن کے نیچے نہریں بہتی ہونگیں ، انکے پھل صورت میں  دنیا کے پھلوں سے ملتے جلتے ہونگیں

 ،جب کوئی پھل انہیں کھانے کو دیا جائے گا  تو وہ کہیں گے ایسے پھل ہم کو دنیا میں ملتے تھے ، وہاں

 انکے لئے پاکیزہ بیویاں ہونگیں  

 

 

سورہ نمبر ٤، ان نساء ، آیت نمبر ٥٧ 


 

وَالَّذِينَ آمَنُواْ وَعَمِلُواْ الصَّالِحَاتِ سَنُدْخِلُهُمْ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا أَبَدًا لَّهُمْ فِيهَا أَزْوَاجٌ مُّطَهَّرَةٌ وَنُدْخِلُهُمْ ظِـلاًّ ظَلِيلاً



ترجمہ  :



اور جن لوگوں نے ہماری آیات کو مان لیا اور نیک عمل کے ، انکو ہم ایسے باغوں میں داخل کرین

 گے جن  کے نیچے نہریں بہتی ہونگیں جہاں وہ ہمیشہ ہمیشہ رہینگے ، ان کو پاکیزہ بیویاں ملے گیں اور انکو ہم

 گھنی چھاؤں میں رکھیں    گے   

 

 

سورہ نمبر ١٨، ال کہف ، آیت نمبر ٣٠ اور ٣١


 

 

oإِنَّ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ إِنَّا لَا نُضِيعُ أَجْرَ مَنْ أَحْسَنَ عَمَلًا

أُوْلَئِكَ لَهُمْ جَنَّاتُ عَدْنٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهِمُ الْأَنْهَارُ يُحَلَّوْنَ فِيهَا مِنْ أَسَاوِرَ مِن ذَهَبٍ وَيَلْبَسُونَ ثِيَابًا خُضْرًا مِّن سُندُسٍ وَإِسْتَبْرَقٍ مُّتَّكِئِينَ فِيهَا عَلَى الْأَرَائِكِ

o نِعْمَ الثَّوَابُ وَحَسُنَتْ مُرْتَفَقًا

 

ترجمہ  :

 

 

وہ لوگ جو مان لیں اور نیک عمل کریں تو یقیناً ہم نیک لوگوں کا عمل ضائع نہیں کرتے ، ان کے لئے

 سدا بہار جنّتیں ہیں ، جن کے نیچے نہریں  بہہ  رہی ہونگیں ، وہاں وہ سونے کے کنگنوں سے آراستہ کئے

 جائینگے، باریک ریشم اور اطلس و   دیبا کے سبز کپڑے پہنے ہونگیں  ، اور اونچی مسندوں پر تکیہ لگائے

 بیٹھے ہونگیں، بہترین اور اعلا درجے کی قیام گاہوں میں -   

 

 

سورہ نمبر ٢٢، ال حج ، آیت نمبر ٢٣

 

إِنَّ اللَّهَ يُدْخِلُ الَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ يُحَلَّوْنَ فِيهَا مِنْ أَسَاوِرَ مِن ذَهَبٍ وَلُؤْلُؤًا وَلِبَاسُهُمْ فِيهَا حَرِيرٌ

 

ترجمہ  :

 

جو لوگ ایمان لائے اور نیک عمل کئے، اللہ انہیں ایسی جنّتوں میں داخل کریگا جن کے نیچے نہریں

  بہہ     رہی ہونگیں ، وہاں وہ لوگ سونے اور موتی کے کنگنوں سے آراستہ کئے جائینگےاور ان کے پاک

 لباس ریشم کے ہونگے 

 

 

سوررہ نمبر ٣٧، اس صافّات آیات نمبر ٤٠ سے ٥٧ تک  

 

oفَوَاكِهُ وَهُم مُّكْرَمُونَ لَهُمْ رِزْقٌ مَّعْلُومٌ إِلَّا عِبَادَ اللَّهِ الْمُخْلَصِينَ

يُطَافُ عَلَيْهِم بِكَأْسٍ مِن مَّعِينٍ oعَلَى سُرُرٍ مُّتَقَابِلِينَ oفِي جَنَّاتِ النَّعِيمِ

وَعِنْدَهُمْ قَاصِرَاتُ لَا فِيهَا غَوْلٌ وَلَا هُمْ عَنْهَا يُنزَفُونَ بَيْضَاء لَذَّةٍ لِّلشَّارِبِينَ

oفَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَى بَعْضٍ يَتَسَاءلُونَ oكَأَنَّهُنَّ بَيْضٌ مَّكْنُونٌ الطَّرْفِ عِينٌ

يَقُولُ أَئِنَّكَ لَمِنْ الْمُصَدِّقِينَ قَالَ قَائِلٌ مِّنْهُمْ إِنِّي كَانَ لِي قَرِينٌ

قَالَ هَلْ أَنتُم مُّطَّلِعُونَ أَئِذَا مِتْنَا وَكُنَّا تُرَابًا وَعِظَامًا أَئِنَّا لَمَدِينُونَ

قَالَ تَاللَّهِ إِنْ كِدتَّ لَتُرْدِينِ فَاطَّلَعَ فَرَآهُ فِي سَوَاء الْجَحِيمِ

وَلَوْلَا نِعْمَةُ رَبِّي لَكُنتُ مِنَ الْمُحْضَرِينَ

 

ترجمہ  :

 

 

اللہ کے نیک بندوں کے لئے جانا پہچانا رزق ہے ، ہر طرح کی لذیذ چیزیں ، اور  نعمت بھری  جنّتیں

 جہاں انہیں عزت کے ساتھ رکھا جائیگا تختوں پر آمنے سامنے بیٹھے ہونگیں شراب کے چشموں  سے

 ساغر بھر  بھر کر ان لوگوں کے درمیان پھرائے جاینگے ، چمکتی ہوئی شراب جو پینے والوں کے لئے

 لذّت ہوگی  ، نہ انکے جسم کو اس سے کوئی نقصان ہوگا اور نہ انکی عقل اس سے خراب ہوگی ، اس

 کے علاوہ ، وہاں پر  حفاظت کرنے والی خوبصورت عورتیں ہونگیں ، ایسی نازک جیسے انڈے کے چھلکے

 کے نیچے چھپی ہوئی جھِلّی، پھر وہ ایک دوسرے کی طرف دیکھ کر حالات پوچھین گے ، ان میں سے

 ایک کہے گا دنیا میں میرا ایک ساتھی تھا ، وہ کہتا تھا ، کیا تم اس پر یقین رکھتے ہو ، جب ہم مر جائیں

 گےاور مِٹّی اور ہڈّی بن جائیں گے ، تو کیا ہم کو انعام اور سزا ملیگی – ایک آواز آئے گی کیا تم اُسکو

 دیکھنا چاہو گے ، نیچے دیکھو ، پھر وہ نیچے  دیکھے گا اور دیکھے گا کہ اُسکا ساتھی ایک دہکتی آگ میں ہے ،

 وہ کہیگا اللہ کی قسم تو مجھے تباہ کر دیتا ، اگر میرے رب کا فضل شامل نہیں  ہوتا تو میں بھی اِنہی

 لوگوں کے ساتھ جہنّم میں ہوتا -

 

 

سوررہ نمبر ٣٨، صُو اد ، آیت نمبر ٥٠ سے ٥٢ تک 

 

جَنَّاتِ عَدْنٍ مُّفَتَّحَةً لَّهُمُ الْأَبْوَابُ oهَذَا ذِكْرٌ وَإِنَّ لِلْمُتَّقِينَ لَحُسْنَ مَآبٍ

مُتَّكِئِينَ فِيهَا يَدْعُونَ فِيهَا بِفَاكِهَةٍ كَثِيرَةٍ وَشَرَابٍ

oوَعِندَهُمْ قَاصِرَاتُ الطَّرْفِ أَتْرَابٌ

 

ترجمہ  :

 

متقی لوگوں کے لئے یہ ایک پیغام ہے ،ہمیشہ رہنے والی جنّتیں جن کے دروازے ان کے لئے کھلے

 ہونگیں ، وہاں وہ لوگ تکیہ لگائے بیٹھے ہونگے وہاں پر وہ لوگ جو مانگیں گےوہ ملے گا  جیسے پھلوں

 اورمشروبات جن کی افراط ہوگی وہاں پر نگاہیں بچانے والی پاکیزہ عورتیں  ہونگیں وہ ہم عمر

 ساتھی ہونگیں

 

 

سورہ نمبر ٣٩، از زُمر ،  آیات نمبر ٧٣ اور ٧٤ 

 

 

وَسِيقَ الَّذِينَ اتَّقَوْا رَبَّهُمْ إِلَى الْجَنَّةِ زُمَرًا حَتَّى إِذَا جَاؤُوهَا وَفُتِحَتْ أَبْوَابُهَا وَقَالَ وَقَالُوا الْحَمْدُ لِلَّهِ

لَهُمْ خَزَنَتُهَا سَلَامٌ عَلَيْكُمْ طِبْتُمْ فَادْخُلُوهَا خَالِدِينَ

الَّذِي صَدَقَنَاوَعْدَهُ وَأَوْرَثَنَا الْأَرْضَ نَتَبَوَّأُ مِنَ الْجَنَّةِ حَيْثُ نَشَاء فَنِعْمَ أَجْرُ الْعَامِلِينَ

 

ترجمہ  :

 

اور جو لوگ اپنے رب کی نا فرمانی سے بچتے تھے گروہ در گروہ  جنّت کی طرف لے جایئں گے یہاں تک

 کہ جب وہ وہاں  تک کے پہونچے گے اس کے دروازے کھولے جائیں گے تو اسکے انتظام کرنے والے

 ان سے کہیں گے سلام ہو تم پر ، بہت اچھے رہے ، داخل ہو جاؤ اس میں ہمیشہ کے لئے ، اور وہ

 کہیں گے ؛ شکر ہے اللہ کا جس نے ہمارےساتھ اپنا و عدہ سچ کر دکھایا اور ہم کو زمین کا وارث بنایا

 ، اب ہم جنّت میں جہاں چاہیں گے جگہ بنا سکتے ہیں ، پس بہترین اجر ہے اچھا عمل کرنے والوں

 کے لئے   

 

 

سورہ نمبر ٤٤، اد دخان ، آیت نمبر ٥١ سے ٥٧  تک

 

يَلْبَسُونَ مِن سُندُسٍ oفِي جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ oإِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي مَقَامٍ أَمِينٍ

يَدْعُونَ فِيهَا oكَذَلِكَ وَزَوَّجْنَاهُم بِحُورٍ عِينٍ oوَإِسْتَبْرَقٍ مُّتَقَابِلِينَ

لَا يَذُوقُونَ فِيهَا الْمَوْتَ إِلَّا الْمَوْتَةَ الْأُولَى وَوَقَاهُمْ oبِكُلِّ فَاكِهَةٍ آمِنِينَ

oفَضْلًا مِّن رَّبِّكَ ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ oعَذَابَ الْجَحِيمِ


ترجمہ  :



متقی لوگ امن کی جگہ ہونگیں، باغوں اور چشموں میں حریر اور ریشم کے لباس پہنے ہونگیں ، وہ ایک

 دوسرے کے آمنے سامنے بیٹھے ہونگیں ہم انکا بیاہ خوبصورت اور بڑی بڑی آنکھوں والی حوروں سے

 کر دینگے، وہاں وہ لوگ ہر قسم کے پھل مانگ سکیں گے ، وہاں انکو موت نہیں آئے گی پس پہلی

 موت جو آ چکی وہ  آ گئی، اللہ ان کو اپنے فضل سے جہنّم کی آگ سے بچادیگا ، یہی بڑی کامیابی ہے اور

 قدرت کا بڑا انعام -  

 

 

سورہ نمبر ٤٧، محمّد ، آیت نمبر ١٥


مَثَلُ الْجَنَّةِ الَّتِي وُعِدَ الْمُتَّقُونَ فِيهَا أَنْهَارٌ مِّن مَّاء غَيْرِ آسِنٍ وَأَنْهَارٌ مِن لَّبَنٍ لَّمْ يَتَغَيَّرْ طَعْمُهُ وَأَنْهَارٌ مِّنْ خَمْرٍ لَّذَّةٍ لِّلشَّارِبِينَ وَأَنْهَارٌ مِّنْ عَسَلٍ مُّصَفًّى وَلَهُمْ فِيهَا مِن كُلِّ الثَّمَرَاتِ وَمَغْفِرَةٌ مِّن رَّبِّهِمْ كَمَنْ هُوَ خَالِدٌ فِي النَّارِ وَسُقُوا مَاء حَمِيمًا فَقَطَّعَ أَمْعَاءهُمْ.

 

ترجمہ  :

 

پرہیزگاروں کے لئے جس جنّت کا وعدہ ہے اسکی شان تو یہی ہےکہ اس کے نیچے صاف پانی کی صاف

 پانی کی نہریں بہہ  رہی ہونگیں ، نہریں بہہ  رہی ہونگیں ایسے دودھ کی جس میں زرہ برابر  فرق نہ آیا ہوگا ،

 نہریں بہہ رہی ہونگیں ایسے شراب کی جو پینے والوں کے لئے لذیذ ہوگی ،    نہریں بہہ  رہی ہونگی صاف

 اور صفاف شہد کی ، یہاں ان کے لئے ہر قسم کے پھل ہونگیں اور ان کے رب کی طرف سے

 بخشش، کیا وہ ان لوگوں کی طرح ہو سکتا ہے جو جہنّم میں ہمیشہ رہینگیں اور جنہیں ایسا گرم پانی پلایا

 جائے  گا جو انکی آنتیں تک کاٹ دیگا    

 

 

سورہ نمبر ٥٢، طور، آیت نمبر ١٧ سے ٢٧ تک

 

فَاكِهِينَ بِمَا آتَاهُمْ رَبُّهُمْ وَوَقَاهُمْ رَبُّهُمْ oإِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي جَنَّاتٍ وَنَعِيمٍ

oكُلُوا وَاشْرَبُوا هَنِيئًا بِمَا كُنتُمْ تَعْمَلُونَ oعَذَابَ الْجَحِيمِ

وَالَّذِينَ آمَنُوا وَاتَّبَعَتْهُمْ مُتَّكِئِينَ عَلَى سُرُرٍ مَّصْفُوفَةٍ وَزَوَّجْنَاهُم بِحُورٍ عِينٍ

رِّيَّتُهُم بِإِيمَانٍ أَلْحَقْنَا بِهِمْ ذُرِّيَّتَهُمْ وَمَا أَلَتْنَاهُم مِّنْ عَمَلِهِم مِّن شَيْءٍ كُلُّ

oوَأَمْدَدْنَاهُم بِفَاكِهَةٍ وَلَحْمٍ مِّمَّا يَشْتَهُونَ امْرِئٍ بِمَا كَسَبَ رَهِينٌ

وَيَطُوفُ عَلَيْهِمْ غِلْمَانٌ لَّهُمْ يَتَنَازَعُونَ فِيهَا كَأْسًا لَّا لَغْوٌ فِيهَا وَلَا تَأْثِيمٌ

oوَأَقْبَلَ بَعْضُهُمْ عَلَى بَعْضٍ يَتَسَاءلُونَ oكَأَنَّهُمْ لُؤْلُؤٌ مَّكْنُونٌ

oفَمَنَّ اللَّهُ عَلَيْنَا وَوَقَانَا عَذَابَ السَّمُومِ oقَالُوا إِنَّا كُنَّا قَبْلُ فِي أَهْلِنَا مُشْفِقِينَ

 

 

ترجمہ  :

 

اور متقی لوگ جنّت میں خوش ہونگیں ، جنّت میں لطف لے رہے ہونگیں ان چیزوں سے جو ان کا

رب انکو دیگا – اور ان کا رب ان کو جہنّم سے بچا لیگا ، مزے سے کھاؤ اور   پیو اپنے اُن اچھے  اعمال

 کےبدلے جو تم کرتے رہے ہو، وہ آمنے سامنے تختوں پر بیٹھے ہونگیں اور خوبصورت آنکھوں والی

 حوروں کو ان سے بیاہ دینگے – جو لوگ ایمان لائے ہیں اور انکی اولاد ایمان پر ان کے نقشوں قدم پر

 چلی ہے تو انکی اولاد کو بھی ہم ان   سے ملا دینگےاور ان کے اچھے اعمال میں انکو کوئی گھاٹا نہیں

 دینگےہر شخص کو اچھے اعمال کی وجہ سے ،ہر طرح کا پھل ، یا گوشت یا جس چییز کو ان کا جی چاہیگا دیا

 جایگا وہ لوگ ایک دوسرے سے شراب کے جام لپک لپک کر لے رہے ہونگیں ، جس میں کوئی خرابی

 یا بدکاری نہیں ہوگی ، اور انکی خدمات میں لڑکے دوڑتے پھر رہے ہونگیں جو ان کے لئے مخصوص

 ہونگیں ، ایسے خوبصورت جیسے چھپا کر رکھے ہوئے موتی ، ایک دوسرے سے بات کر کے کہیں گے

 جب ہم دنیا میں  اپنے گھروں میں (اللہ) سے   ڈرتے ہوئے زندگی بسر کرتے تھے ، آخر کار اللہ نے

 ہم پر اپنا فضل فرمایا اور ہم کو جُھلسا دینے والی ہوا سے بچا لیا 


سورہ نمبر ٥٥، الرحمان ، آیت نمبر ٤٦ سے ٧٨ تک   


 

oذَوَاتَا أَفْنَانٍ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oمَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّهِ جَنَّتَانِ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oفِيهِمَا عَيْنَانِ تَجْرِيَانِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oفِيهِمَا مِن كُلِّ فَاكِهَةٍ زَوْجَانِ

مُتَّكِئِينَ عَلَى فُرُشٍ بَطَائِنُهَا مِنْ إِسْتَبْرَقٍ وَجَنَى الْجَنَّتَيْنِ دَانٍ

فِيهِنَّ قَاصِرَاتُ الطَّرْفِ لَمْ يَطْمِثْهُنَّ+ فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

كَأَنَّهُنَّ الْيَاقُوتُ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ oإِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ

oهَلْ جَزَاء الْإِحْسَانِ إِلَّا الْإِحْسَانُ فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ وَالْمَرْجَانُ

oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ وَمِن دُونِهِمَا جَنَّتَانِ فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفِيهِمَا عَيْنَانِ نَضَّاخَتَانِ فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ مُدْهَامَّتَانِ

فِيهِمَا فَاكِهَةٌ وَنَخْلٌ وَرُمَّانٌ فَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oفِيهِنَّ خَيْرَاتٌ حِسَانٌ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oحُورٌ مَّقْصُورَاتٌ فِي الْخِيَامِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

لَمْ oيَطْمِثْهُنَّ إِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oمُتَّكِئِينَ عَلَى رَفْرَفٍ خُضْرٍ وَعَبْقَرِيٍّ حِسَانٍ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

oيَطْمِثْهُنَّ إِنسٌ قَبْلَهُمْ وَلَا جَانٌّ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

تَبَارَكَتَبَارَكَ اسْمُ رَبِّكَ ذِي الْجَلَالِ وَالْإِكْرَامِ oفَبِأَيِّ آلَاء رَبِّكُمَا تُكَذِّبَانِ

 

 ترجمہ  :


اور ہر اس شخص کے لئے جو اپنے رب کے حضور پیش ہونے کا خوف رکھتا ہو ، دو باغ ہیں ، اپنے رب

 کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- ہری بھری ڈالیوں سے بھر پور ،  اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو

 جھٹلاؤگے  ؟-  دونوں باغوں میں دو چشمے رواں ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- دونوں

 باغوں میں ہر پھل کی دو قسمیں ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- جنّتی لوگ ایسے

 فرشوں پر تکیہ لگائے بیٹھے ہونگیں ،جن کے استر دبیز ریشم کے ہونگے اور ڈالیاں پھلوں سے جھکی پڑ

 رہی ہونگیں ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟-  ان نعمتوں کے درمیان شرمیلی نگاہوں

 والیاں ہونگیں ،جنہیں کبھی کسی انسان یا جِن نے چُھوا نہ ہوگا ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو

 جھٹلاؤگے  ؟- ایسی خوبصورت جیسے ہیرے اور موتی ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟-  نیکی

 کا بدلہ نیکی کے سوا کیا ہو سکتا ہے ، پھر اے جِن و اِنس، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کا انکار کروگے

  ؟-  اور اُن دو باغوں کے علاوہ دو باغ اور ہونگے ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- گھنے

 اور سیر و سبز و شاداب باغ ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- دونوں باغوں میں دو چشمے

 فوّاروں کے طرح ابلتے ہوئے ؛ اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟-  ان میں بکثرت پھل

 اور کھجوریں اور انار ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- ان نعمتوں کے درمیان خوب

 سیرت اور خوبصورت بیویاں ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟-  خیموں میں بیٹھی جنّتیوں

 کے انتظار میں ہونگیں اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟-  ان جنّتیوں سے پہلے کبھی کسی

 انسان یا جن نے چھوا نہ ہوگا ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- وہ جنّتی سبز قالینوں اور

 نفیس و نادر فرشوں پر تکیے لگائے بیٹھے ہونگے ، اپنے رب کی کن کن نعمتوں کو جھٹلاؤگے  ؟- بڑی

 برکت والا ہے تیرے ربِّ جلیل و کریم کا نام -

 

 

سورہ نمبر ٥٦ ، واقعہ ، آیت ٧ سے ٤٠ تک

 

وَأَصْحَابُ oفَأَصْحَابُ الْمَيْمَنَةِ مَا أَصْحَابُ الْمَيْمَنَةِoوَكُنتُمْ أَزْوَاجًا ثَلَاثَةً

oأُوْلَئِكَ الْمُقَرَّبُونَ oوَالسَّابِقُونَ السَّابِقُونَ oلْمَشْأَمَةِ مَا أَصْحَابُ الْمَشْأَمَةِ

oوَقَلِيلٌ مِّنَ الْآخِرِينَ oثُلَّةٌ مِّنَ الْأَوَّلِينَ فِي جَنَّاتِ النَّعِيمِ

يَطُوفُ عَلَيْهِمْ oمُتَّكِئِينَ عَلَيْهَا مُتَقَابِلِينَ oعَلَى سُرُرٍ مَّوْضُونَةٍ

لَا يُصَدَّعُونَ عَنْهَا بِأَكْوَابٍ وَأَبَارِيقَ وَكَأْسٍ مِّن مَّعِينٍ وِلْدَانٌ مُّخَلَّدُونَ

oوَلَحْمِ طَيْرٍ مِّمَّا يَشْتَهُونَ oوَفَاكِهَةٍ مِّمَّا يَتَخَيَّرُونَ oوَلَا يُنزِفُونَ

جَزَاء بِمَا كَانُوا يَعْمَلُونَ oكَأَمْثَالِ اللُّؤْلُؤِ الْمَكْنُونِ oوَحُورٌ عِينٌ

وَأَصْحَابُ الْيَمِينِ إِلَّا قِيلًا سَلَامًا سَلَامًا oلَا يَسْمَعُونَ فِيهَا لَغْوًا وَلَا تَأْثِيمًا

oوَطَلْحٍ مَّنضُودٍ oفِي سِدْرٍ مَّخْضُودٍ oمَا أَصْحَابُ الْيَمِينِ

oلَّا مَقْطُوعَةٍ وَلَا مَمْنُوعَةٍ وَفَاكِهَةٍ كَثِيرَةٍ oوَمَاء مَّسْكُوبٍ oوَظِلٍّ مَّمْدُودٍ

عُرُبًا أَتْرَابًا فَجَعَلْنَاهُنَّ أَبْكَارًا إِنَّا أَنشَأْنَاهُنَّ إِنشَاء وَفُرُشٍ مَّرْفُوعَةٍ

oوَثُلَّةٌ مِّنَ الْآخِرِينَ oثُلَّةٌ مِّنَ الْأَوَّلِينَ oلِّأَصْحَابِ الْيَمِينِ

 

 

ترجمہ  :

 

تم لوگ اس وقت تین گر و ہوں میں تقسیم ہو جاؤ گے ،دائیں بازو والے ، سو دائیں بازو وا لوں  کا کیا

 کہنا ،  اور  بائیں بازو والے،  تو بائیں  بازو والوں کا کیا ٹھکانا،  اور آگے والے،  توپھر آگے والے  ہی ہیں 

      وہی تو لوگ  ہیں جو نعمتیں بھری جنّتوں میں رہیں گے ،  اگلوں میں بہت ہوں  گےاور پچھلوں میں کم ،

 یہ لوگ مُرَسّع تختوں پر تکیہ لگائے آمنے سامنے بیٹھے ہوں گے ان کی مجلسوں میں ابدی       

  لڑکے جاری چشموں سے شراب سے لبریز پیالے اور ساغر لئے دوڑتے پھرتے ہونگے جسے پی کر نہ ان

 کا سر چکرا ئیگا اور نہ ان کی عقل میں فتور  آئے گا ، اور ان کے سامنے طرح طرح کے لذیذ پھل پیش

 کریں  گے وہ جسے چاہیں چن لیں ، اور پرندوں کا گوشت پیش کریں گے کہ جس پرندے کا چاہیں

 استمال  کریں ، ان  کے لئے خوبصورت آنکھوں والی حوریں ہونگیں ، ایسی حسین جیسے چھپا کر رکھے

 ہوئے موتی، یہ سب ان کے اچھے اعمال کی جزا کے طور پر انہیں ملے گا جو وہ دنیا میں کرتے رہے

 تھے، وہاں پر وہ کوئی  بیہودہ کلام یا گناہ کی بات نہیں سنیں گے ، جو بات بھی ہوگی ٹھیک ٹھیک

 ہوگیاور دائیں بازو والے ، تو دائیں بازو والوں کی خوش نصیبی کا کیا کہنا  !  وہ لوگ ، بے خار بیر یوں اور

 پھول والے پودوں کے بیچ دور تک پھیلی ہوئی چھاؤں ، ہر  دم رواں پانی،  کبھی ختم نہ ہونے والے

 اور   بے روک ٹوک ملنے والے بکثرت پھل ، اونچی نشستگاہوں میں ہونگے – وہاں  نیک عورتوں کو

 خاص طور پر  نئے سرے سے پیدا کرینگے اور انکو پوری طرح سے پاکیزہ بنا دیگیں  ، وہ اپنے شوہروں کی

 پیاری اور   عمر میں برابر  ہونگی ، یہ سب دائیں بازو والوں کے لئے  ہے ، وہ اگلوں میں بھی بہت

 ہونگے اور پچھلوں میں بھی بہت –

 

تبصرہ :


اس دنیا میں جو خواتین نیکی کے راستے پر زندگی گزار کر آخرت کی زندگی  میں داخل ہونگیں وہاں اللہ

 ان کی نئے سرے سے خصوصی تخلیق کریگا  ، اگر ان کے شوہر بھی  جنّت میں موجود ہونگے  تو یہ

 خواتین  جوانی کی حالت میں اپنے ہم عمر شوہروں سے ملا دی جائیں گی ، اس دنیا کی نیک عورتوں کی

 علامت یہ  ہے کہ وہ  اپنے ایمان اور  اور اچھے اعمال کی بنیاد پر ہی جنّت  میں داخل ہوں گی ،  اللہ

 ان کو جوان کر دے گا چاہے وہ دنیا میں کسی بھی عمر میں انتقال کر گئی ہوں اگر وہ دنیا میں

 خوبصورت نہ رہی ہوں تو ان کو خوبصورت بنا دیا جائیگا اور  ان کو کنواری بھی   بنادے گا چاہے

 وہ دنیا میں اولاد بھی پیدا کر کے گئی ہوں-  اگر ان کے شوہر جنّت میں نہ جا پائیں تو پھر ان کا

 نکاح کسی اور جنّتی کے ساتھ کر دیا جائیگا – اس آیت کی وضاحت نبی اکرم صلی اللہ علیہ و سلم نے

 متعدد احادیث میں  کی ہے  حضرت شمع ال ترمزی سے روایت ہے کہ ایک بوڑھی خاتون نے

 اللہ  کے رسول سےدعا کی  درخواست کی    کہ ان کو جنّت میں داخلہ مل جائے تو اللہ کے رسول

 نےجواب دیا   کہ" کوئی بوڑھی عورت جنّت میں داخل نہیں ہوگی"   یہ سن کر وہ عورت روتی

 ہوئی واپس چلی گئی-اس کے بعد اللہ کے رسول نے لوگوں سے کہا  : " اس عورت سے کہہ دو کہ وہ

 بوڑھی عورت کی طرح جنّت میں داخل نہیں ہوگی کیونکہ اللہ کا ارشاد ہے کہ " ہم انہیں نئے سرے

سے پیدا کرین گے اور ہم انہیں کنواری کر دیں گے " ابن ابی حاتم  نے حضرت سلمہ بن یزید کی روایت

 نقل کی ہے کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ و سلم کو  اس آیت کی وضاحت  کرتے سنا   ہےکہ چاہے اس

 دنیا کی عورتوں   کی موت کنواریوں کی شکل میں ہوئی ہو یا شادی شدہ حالت میں،  تو بھی وہ جوان ،

 کنواری  اور  خوبصورت ہو کر اٹھائی جائیں گی طبرانی میں امم سلمہ کی ایک لمبی روایت موجود  ہے کہ

 انہوں نے رسول اکرم سے قرآن مجید میں عورتوں کے بارے میں  کی گئی  متعدد آیتوں کے بارے

 میں سوالات کئے-   ان آیتوں  کی وضاعت کرتے ہوئے اللہ کے رسول نے یہ فرمایا " یہ وہ عورتیں

 ہیں جو عمر رسیدہ،   بزرگ ،   افسردہ آنکھوں اور سفید  بالوں کے ساتھ فوت ہو گئیں ہیں  تو بھی اللہ

 ان کو جوان  اور کنواری بنا کر ہی اٹھائے گا امم سلمہ نے آگے یہ پوچھا  کہ اگرکسی  عورت کے ایک

 سے زیادہ شوہر ہوں تو جنّت میں وہ کس شوہر سے تعلق رکھے گی  ؟ حضور نے جواب دیا  " وہ خوداپنی

   مرضی کا ا انتخاب کریگی اور  جس کا بہترین اخلاقی کردار ہوگا وہ اس سے نکاح کریگی"

(یہ تبصرہ بہت  سی احادیث کے علاوہ تفسیر  تفہیم القرآن میں موجود ہے )

  

سورہ نمبر ٧٦، ال انسان ( اد دھر ) ، آیت نمبر ١٢ سے ٢٢ تک

              

مُتَّكِئِينَ فِيهَا عَلَى الْأَرَائِكِ لَا يَرَوْنَ فِيهَا oوَجَزَاهُم بِمَا صَبَرُوا جَنَّةً وَحَرِيرًا

oوَدَانِيَةً عَلَيْهِمْ ظِلَالُهَا وَذُلِّلَتْ قُطُوفُهَا تَذْلِيلًا oشَمْسًا وَلَا زَمْهَرِيرًا

قَوَارِيرَ مِن فِضَّةٍ oوَيُطَافُ عَلَيْهِم بِآنِيَةٍ مِّن فِضَّةٍ وَأَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَارِيرَا

وَيُسْقَوْنَ فِيهَا قَوَارِيرَ مِن فِضَّةٍ قَدَّرُوهَا تَقْدِيرًا oوَأَكْوَابٍ كَانَتْ قَوَارِيرَا

وَيَطُوفُ عَلَيْهِمْ oعَيْنًا فِيهَا تُسَمَّى سَلْسَبِيلًا oكَأْسًا كَانَ مِزَاجُهَا زَنجَبِيلًا

وَإِذَا رَأَيْتَ ثَمَّ رَأَيْتَ oوِلْدَانٌ مُّخَلَّدُونَ إِذَا رَأَيْتَهُمْ حَسِبْتَهُمْ لُؤْلُؤًا مَّنثُورًا

عَالِيَهُمْ ثِيَابُ سُندُسٍ خُضْرٌ وَإِسْتَبْرَقٌ وَحُلُّوا أَسَاوِرَ مِن oنَعِيمًا وَمُلْكًا كَبِيرًا

إِنَّ هَذَا كَانَ لَكُمْ جَزَاء وَكَانَ سَعْيُكُم مَّشْكُورًا oفِضَّةٍ وَسَقَاهُمْ رَبُّهُمْ شَرَابًا طَهُورًا


ترجمہ  :


اور ان کے صبر کے بدلے ان کو جنّت اور ریشمی لباس عطا کرے گا ، وہاں وہ اونچی مسندوں پر تکیہ  لگائے بیٹھے ہوں گے ، نہ انہیں دھوپ کی گرمی ستائے گی نہ جاڑے کی سردی – جنّت کی چھاؤں ان پر جھکی ہوئی سایہ کر رہی ہوگی ، اسکے پھل ہر وقت ان کے بس میں ہونگے ، ان کے آگے چاندی کے برتن اور شیشے کے پیالے گردش کرائے جا رہے ہونگے ، شیشے بھی چاندی کی قسم کے ہونگے اور انکو ٹھیک اندازے کے مطابق بھرا ہوگا . انکو وہاں ایسی شراب کے جام پلائے جائیں گے جن میں سونٹھ کی آمیزش ہوگی، یہ جنّت کے ایک چشمہ ہوگا جسے سلسبیل کہا جاتا ہے انکی خدمات کے لئے    ایسے لڑکے دوڑتے پھر رہے ہوں گے جو ہمیشہ لڑکے ہی رہین گے، تم انہیں دیکھو گے تو سمجھوکہ موتی ہیں جو بکھر گئے  ہیں وہاں جدہر بھی نظر ڈالوگے نعمتیں ہی نعمتیں ہوں گی ، ایک بڑ ی سلطنت کا سر و سامان  تمہے نظر آئےگا ، ان کے اوپر باریک ریشم کے سبز لباس اور اطلس اور دیبا کے کپڑے ہوں گے ، ان کو چاندی کے کنگن پہنائے جاینگے  اور ان کا رب ان کو نہایت پاکیزہ شراب پلائے گا ، یہ ہے تمھاری جزا اور تمھاری کارگزاری جو قابل قدر ہے 

 

سورہ نمبر ٨٨، الغاشیہ ، آیت نمبر ٨ سے ١٦ تک 

 

o فِي جَنَّةٍ عَالِيَةٍ لِسَعْيِهَا رَاضِيَةٌ وُجُوهٌ يَوْمَئِذٍنَّاعِمَةٌ

فِيهَا سُرُرٌمَّرْفُوعَةٌ فِيهَا عَيْنٌ جَارِيَةٌ o لَّاتَسْمَعُ فِيهَا لَاغِيَةً

وَزَرَابِيُّ مَبْثُوثَةٌ وَنَمَارِقُ مَصْفُوفَةٌ وَأَكْوَابٌ مَّوْضُوعَةٌ

 

 

ترجمہ  :

 

 

کچھ چہرے اس روز با رونق ہوں گے ، اپنی کارگزاری پر خوش ہوں گے ،   عالی مقام جنّت میں ہوں گے، کوئی بیہودہ بات نہ سنیں گے ، اس میں چشمے رواں ہوں گے ، اس کے اندر اونچی مسندیں ہوں گی ، ساغر رکھے ہوئے ہوں گے ، گاوٍ تکیے کی قطارے لگی ہوں گی اور نفیس فرش بچھے ہوئے ہوں گے   

 

 

سورہ نمبر ٣، العمران، آیت نمبر ١٣٣ 

 

 

وَسَارِعُواْ إِلَى مَغْفِرَةٍ مِّن رَّبِّكُمْ وَجَنَّةٍ عَرْضُهَا السَّمَاوَاتُ وَالأَرْضُ أُعِدَّتْ

 لِلْمُتَّقِينَ


ترجمہ  :


دوڑ کر چلو اس راہ پر جو تمھارے رب کی بخشش اور اس جنّت کی طرف جاتی ہے جس کی وسعت

 زمین اور آسمانوں جیسی ہے 

 

سورہ نمبر ٣ ، ال عمران ، آیت نمبر ١٨٥

 

نَّمَا تُوَفَّوْنَ أُجُورَكُمْ يَوْمَ الْقِيَامَةِ فَمَن زُحْزِحَ عَنِ النَّارِ وَأُدْخِلَ الْجَنَّةَ فَقَدْ فَازَ

o وَما الْحَيَاةُ الدُّنْيَا إِلاَّ مَتَاعُ الْغُر

 

ترجمہ  :

 

 

ور تم اپنے اپنے پورے  اجر قیامت کے روز پانے واے ہو ، کامیاب دراصل وہ ہے جو وہاں دوزخ کی

 آگ سے بچ جائے اور جنّت میں داخل کر دیا جائے ، رہی یہ دنیا تو یہ محض ایک ظاہر فریب چییز ہے  

 


سورہ نمبر ٩،  توبہ ، آیت نمبر ٧٢

.  

 

وَعَدَ اللّهُ الْمُؤْمِنِينَ وَالْمُؤْمِنَاتِ جَنَّاتٍ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا وَمَسَاكِنَ طَيِّبَةً فِي جَنَّاتِ عَدْنٍ وَرِضْوَانٌ مِّنَ اللّهِ أَكْبَرُ ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ

 

ترجمہ  :                                              

 


اللہ  نے ایمان والے آدمی اور عورت سے یہ وعدہ کیا ہے کہ یہ لوگ ایک ایسے  باغ میں جس کے نیچے نہریں

 بہتی ہیں اس میں ہمیشہ ہمیشہ رہیں گے وہاں ایک خوبصورت محل بھی ہے جس کا نام عدن کا باغ ہے، لیکن

   یہ  سب     سے بڑی نعمت ہے  اور یہ بہت  بڑی  کا میابی ہے

 

سورہ نمبر ٢٩، العنکبوت ، آیت نمبر ٥٨

 

وَالَّذِينَ آمَنُوا وَعَمِلُوا الصَّالِحَاتِ لَنُبَوِّئَنَّهُم مِّنَ الْجَنَّةِ غُرَفًا تَجْرِي مِن تَحْتِهَا

o الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا نِعْمَ أَجْرُ الْعَامِلِينَ

 

ترجمہ  :


جو لوگ ایمان لائےہیں اور جنھوں نے نیک عمل کئے ہیں ان کو ہم جنّت کی بلند عمارتوں میں

 رکھیں گے جن کے نیچے نہریں بہتی ہوں گی ، وہاں وہ ہمیشہ رہیں گے ، کیا ہی عمدہ اجر ہے نیک

 عمل کرنے والوں کے لئے -  

 

سورہ نمبر ٣٦، ال یاسین ، آیت نمبر ٥٥ سے ٥٧ تک

 

هُمْ وَأَزْوَاجُهُمْ فِي ظِلَالٍ إِنَّ أَصْحَابَ الْجَنَّةِ الْيَوْمَ فِي شُغُلٍ فَاكِهُونَ

لَهُمْ فِيهَا فَاكِهَةٌ وَلَهُم مَّا يَدَّعُونَ عَلَى الْأَرَائِكِ مُتَّكِؤُونَ

 

ترجمہ  :

 

اصل میں جنّتی لوگ مزے کرنے میں مشغول ہوں گے ، وہ اور انکی بیویاں گھنے  سایوں میں تکیے

 لگائے بیٹھے ہوں گے ، ہر قسم کی لذیذ چیزیں کھانے پینے کو ان کے لئے وہاں موجود ہیں ، جو کچھ وہ

 طلب کریں گے ان کے لئے حاضر ہے  


سورہ نمبر ٥١، الزار یات ، آیت نمبر ١٥ سے ١٩ تک  

 

آخِذِينَ مَا آتَاهُمْ رَبُّهُمْ إِنَّهُمْ كَانُوا قَبْلَ o إِنَّ الْمُتَّقِينَ فِي جَنَّاتٍ وَعُيُونٍ

وَبِالْأَسْحَارِ هُمْ o كَانُوا قَلِيلًا مِّنَ اللَّيْلِ مَا يَهْجَعُونَo ذَلِكَ مُحْسِنِينَ

وَفِي أَمْوَالِهِمْ حَقٌّ لِّلسَّائِلِ وَالْمَحْرُومِ o يَسْتَغْفِرُونَ

 

 

ترجمہ  :

 

 

متقی لوگ اس روز باغوں اور چشموں میں ہوں گے، جو کچھ ان کا رب دے گا خوشی خوشی  لے رہے

 

 ہوں گے ، وہ اس دن کے آنے سے پہلے نیکو کار تھے ، راتوں کو کم سوتے تھے پھر وہی رات کے پچھلے

 

 پہروں میں معافی مانگتے تھے اور ان کے مالوں میں حق تھا سائل اور محروم کے لئے-  

 

 

سورہ نمبر ٥٧، الحدید ، آیت نمبر ١٢ 

 

يَوْمَ تَرَى الْمُؤْمِنِينَ وَالْمُؤْمِنَاتِ يَسْعَى نُورُهُم بَيْنَ أَيْدِيهِمْ وَبِأَيْمَانِهِم بُشْرَاكُمُ

o الْيَوْمَ جَنَّاتٌ تَجْرِي مِن تَحْتِهَا الْأَنْهَارُ خَالِدِينَ فِيهَا ذَلِكَ هُوَ الْفَوْزُ الْعَظِيمُ

 

 

ترجمہ  :

 

اس دن ( او  محمّد) تم مومن مردوں کو اور مومن عورتوں کو دیکھو گے کہ ان کا  نور ان کے آگے

 آگے اور ان کے دائیں جانب دوڑ رہا ہوگا – (ان سے کہا جائیگا ) آج بشارت ہے تمھارے لئے جنّتیں

 ہوں گیجن کے نیچے نہریں بہہ  رہی ہوں گی، جن میں وہ ہمیشہ رہیں گے ، یہ بڑی کامیابی ہے     

 

سورہ نمبر ٧٠، المعا رج، آیتیں نمبر ٢٣ سے ٢٩ اور ٣٢ سے ٣٥ تک  



o وَالَّذِينَ فِي أَمْوَالِهِمْحَقٌّ مَّعْلُومٌ الَّذِينَ هُمْ عَلَى صَلَاتِهِمْ دَائِمُونَ

وَالَّذِينَ هُم مِّنْ عَذَابِ o وَالَّذِينَ يُصَدِّقُونَبِيَوْمِ الدِّينِ o لِّلسَّائِلِ وَالْمَحْرُومِ

وَالَّذِينَ هُمْ لِفُرُوجِهِمْ إِنَّ عَذَابَ رَبِّهِمْ غَيْرُ مَأْمُونٍ o رَبِّهِم مُّشْفِقُونَ

o حَافِظُونَ

وَالَّذِينَ هُم بِشَهَادَاتِهِمْ قَائِمُونَ وَالَّذِينَ هُمْ لِأَمَانَاتِهِمْ وَعَهْدِهِمْ رَاعُونَ

أُوْلَئِكَ فِي جَنَّاتٍ مُّكْرَمُونَ وَالَّذِينَ هُمْ عَلَىصَلَاتِهِمْ يُحَافِظُونَ



ترجمہ  :

 

جو ہمیشہ  نماز کی پابندی کرتے ہےجن کے مالوں میں سائل اور محروم کا حق مُقرّر ہے جو روزِ جزا کو

 برحق مانتے ہیں جو اپنے رب کے عذاب سے ڈرتے ہیں کیونکہ ان کے رب کا عذاب ایسی چییز نہیں

 ہے جس سے کوئی بے خوف ہو جو اپنی شرم گاہوں کی حفاظت کرتے ہیں  جو اپنی امانتوں کی حفاظت

 اور اپنے عہد کا پاس  کرتے  ہیں جو اپنی گواہیوں پر قائم رہتے ہیں جو ا پنی نماز کی خبر رکھتے ہیں  یہ

 لوگ عزت کے ساتھ جنّت کے باغوں میں رہیں گے

 

سورہ نمبر ٧٨ ، انّبا، آیت نمبر ٣١ سے  ٣٤ تک    

 

o وَكَأْسًا دِهَاقًا وَكَوَاعِبَ أَتْرَابًا حَدَائِقَ وَأَعْنَابًا o إِنَّ لِلْمُتَّقِينَ مَفَازًا

 

یقیناً متّقیوں کے لئے کامرانی کا ایک مقام ہے ، باغ اور انگور اور جوان ہم عمر عورتیں

 اور چھلکتے ہوئے جام 

 

سورہ نمبر ٨٣، ال متفّفین، آیت نمبر ٢٢ سے ٢٨  تک   

 

تَعْرِفُ فِي وُجُوهِهِمْ o عَلَىالْأَرَائِكِ يَنظُرُونَ إِنَّ الْأَبْرَارَ لَفِي نَعِيمٍ

خِتَامُهُ مِسْكٌ وَفِي ذَلِكَ يُسْقَوْنَ مِن رَّحِيقٍ مَّخْتُومٍ نَضْرَةَ النَّعِيمِ

عَيْنًايَشْرَبُ بِهَا الْمُقَرَّبُونَ وَمِزَاجُهُ مِن تَسْنِيمٍ فَلْيَتَنَافَسِ الْمُتَنَافِسُونَ



ترجمہ  :

 

بیشک نیک لوگ بڑے مزے میں ہوں گے، اونچے مسندوں پر بیٹھے نظارے کر رہے ہوں گے، ان کے چہروں پر  خوش ہالی کی رونق محسوس کرو گے ، ان کو نفیس اور سربند شراب پلائی جائیگی جس پر مشک کی موہر لگی ہو گی، جو لوگ ددوسروں پر بازی لے جانا چاہتے ہو وہ اسکی  بازی لے جانے کی کوشش کریں ، اس شراب میں میں تسنیم کی آمیزش ہوگی، یہ ایک چشمہ ہے جس کے پانی کے ساتھ مقرب لوگ شراب پئیں گے   

 

سورہ نمبر ٤، النساء، آیت نمبر ٣١  

 

 

إِن تَجْتَنِبُواْ كَبَآئِرَ مَا تُنْهَوْنَ عَنْهُ نُكَفِّرْ عَنكُمْ سَيِّئَاتِكُمْ وَنُدْخِلْكُم مُّدْخَلاً كَرِيمًا

 

ترجمہ  :

 

 

اگر تم ان بڑے گناہوں سے پرہیز کرتے رہو جن سے تمھیں منع کیا جا رہا ہے تو تمھاری چوٹی موٹی برائیوں کو تمھارے حساب سے نکال دینگے اور تم کو جنّت میں عزت کی جگہ داخل کریں گے  

 

If you have any feedback please revert to:  arifrk43@gmail.com