Requirement in Salaat  and prescribed Time of Salat

      نماز کی ضرورتیں اور نماز کے مقررہ اوقات    

 (انگلش میں ہدایات کے پوری ہونے کے بعد اردو میں نیچے موجود ہیں )


Before reciting Salaat, a person is required to pay due attention to the following :

I. Cleanliness of the body 


Once the person takes a bath, he must avoid any dirty stains of urine, stool (to observe Taharat)  on his body and clothes .

When he or she is clean, the very first thing to perform is Ablution (Wuzu)

 Ablution   

Surah No. 5, Al Maaeda, Ayat No. 6


يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ إِذَا قُمْتُمْ إِلَى الصَّلاةِ فاغْسِلُواْ وُجُوهَكُمْ وَأَيْدِيَكُمْ إِلَى

الْمَرَافِقِ وَامْسَحُواْ بِرُؤُوسِكُمْ وَأَرْجُلَكُمْ إِلَى الْكَعْبَينِ

Translation :


O Believers ! When you prepare for prayer (Salat) wash your faces and your hands to the elbows ; Rub your head with water and wash your feet to the ankles .


Ablution (Wuzu) is required to be done when a person is going to perform salaat or recite Quran. It remains valid upto 24 hours but it is nullified  if one urinates, passes gas through anus or passes stool or falls into deep sleep.


How to perform the Wuzu is mentioned below in one of the Hadis :


Hadis No.1.142, Sahi Bukhari :


"Narrated `Ata bin Yasar: Ibn `Abbas (ra), "I saw Allahs Apostle (saws) performing ablution (wuzu) in this way."

He took handful of water, rinsed his mouth and washed his nose with it by putting water in and then blowing it out.

He then, took another handful of water and washed his face.

He took another handful of water and washed his right forearm. He again took another handful of water and washed his left forearm.

He then passed wet hands over his head.

He then took another handful of water and poured it over his right foot up to his ankles and washed it thoroughly and similarly took another handful of water and washed thoroughly his left foot up to the ankles.

What are the Obligatory things in Wuzu

1. Washing the face

2. Washing both hands to the elbows

3. Passing Wet hands over his head

4. Washing both feet to the anklesا 

 What are the sunnah (Sunnat) in Wuzu

     1. Say : Bismillah hir Rahman nir Rahim

     2. Brushing the teeth with Siwak (Miswak)

3. Cleaning the nose with water and blowing it

4. Washing each part twice or thrice


     II. Cleanliness of clothes
  
      No stains of urine, feces on the clothes

           
      III . Cleanliness of the place of Salaat (Namaz)



    IV . Covering of Satr
    For men: covering the body including the knees and for women covering the whole body from head to the  ankles excluding feet, hands upto wrists and face

   V.  Precautions in Salat ( Namaz ) :


( Do not join prayer when polluted )


Surat No.4 , An Nisa , Ayat No. 43


o حَتَّىَ تَعْلَمُواْ مَا تَقُولُونَ وَلاَ جُنُبًا إِلاَّ عَابِرِي سَبِيلٍ حَتَّىَ تَغْتَسِلُو

Translation :

When you are polluted, do not approach prayer till you have bathed.

 


  Farz During the Salat

Facing towards Kaaba 

To begin salat with Takbeer Tahrima (First Takbeer saying Allaho Akbar)

Qiyam in every rakat (To be stationed at one place)

Qirat (Reciting Quran in all the rakats)

Ruku in every rakat

Two Sijdahs in every rakat

Akhri Qa'edah (Sitting in last rakat)

Salaam (To end the salat).

Wajib in Salaat (Namaz)

To recite a Surah or at least one large ayat or three small ayats in first two rakats of Farz  rest two are without surahs and all the rakats of other salaats (namaz) after surah Fatiha.

To observe sequence (all actions)

To observe Qauma (standing in straight position after ruku)

To observe Jalsah (Sitting straight between two sijdahs)

To observe Qa'eda Oola.(Sitting after two rakats when Attahiyyat is recited)

To raise hands with Takbeer and recite Dua-e- Qunoot in the last rakat of Witr.

Sunnat in Salat (Namaz)

To raise hands and turn palms towards Qibla before Takbeer Tahrimah. For males to ear lobes. For female shoulder level.

To keep the head erect while pronouncing Takbeer Tahrimah.

To tie hands properly after Takbeer Tahrimah.

To recite Sana (Thana)

To pronounce Auooz.

To recite Bismillah hir Rahman nir Rahim

To recite Ameen (silently) after Surah Fatiha.

To pronounce tasbih at least thrice in ruku (Sub hana Rabbiyal Azeem) and in sijdah (Sub hana Rabbiyal aala)

To perform sijdah one should rest the knees first, followed by two hands, then nose and at last forehead.

Types of Salats

       1. Farz: obligatory prayer (Differentiate between non believers and Muslims) 

2. Wajib: obligatory prayer (Denying a Wajib makes one a sinner)
3. Sunnat & Nafil : Prophet's tradition, Optional


  VI . Prescribed time of Salat 

Quran has confirmed five salaats at different timing in the day. Following are the references in holy Quran with regard to timings of five Salaats :

Surah No. 4 , An Nisa , Ayat No. 103


إِنَّ الصَّلاَةَ كَانَتْ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ كِتَابًا مَّوْقُوتًا

Translation :


Worship at fixed times has been enjoined on the believers

( Must pray at fixed time )


Five salat timings 

Surah No. 2, Al-Baqar Ayat No. 238

 

o حَافِظُواْ عَلَى الصَّلَوَاتِ والصَّلاَةِ الْوُسْطَى وَقُومُواْ لِلّهِ قَانِتِينَ

Translation :


Safeguard your Prayer regularly, especially the middle prayer “( Asr )

 
Surah No.11, Hud Ayat No.114

وَأَقِمِ الصَّلاَةَ طَرَفَيِ النَّهَارِ وَزُلَفًا مِّنَ اللَّيْلِ إِنَّ الْحَسَنَاتِ يُذْهِبْنَ السَّـيِّئَاتِ

o ذَلِكَ ذِكْرَى لِلذَّاكِرِينَ

Translation :

Attend your prayer at the two ends of the day and some hours of night “ (Fajar, Maghrib and Isha)

Surah No. 17, Bani Israel Ayat No. 78

أَقِمِ الصَّلاَةَ لِدُلُوكِ الشَّمْسِ إِلَى غَسَقِ اللَّيْلِ وَقُرْآنَ الْفَجْرِ إِنَّ قُرْآنَ الْفَجْرِ كَانَ مَشْهُودًا

Translation :

Establish prayer at the decline of the sun till the darkness of the night (Asr, Maghrib and Isha) and keep recital of the Quran in the morning prayer “ (Fajar)

Hadis :

Narrated by Ibne Abbas (ra): "The Prophet (saws) had initially recited Namaz for two consequent days which was guided by Hazrat Jibraeel.

First day – Zohar was recited immediately after the decline of the sun and then Asar was recited when the shadow of an object became equal to its size. Maghrib was immediately after the sun set, Isha was when the glow of the sun set disappeared and finally Fajar, before the sun rise.

Second day – Zohar was  recited when the shadow became equal to the size of an object, Asar when shadow became double the size of an object, Maghrib after the sunset, Isha when 1/3 rd night passed away and Fajar when light of the day started appearing

( Tirmizi and Abu Dawood )

 Narrated Abu Al-Minhal: Abu Barza said, "The Prophet used to offer the Fajr (prayer) when one could recognize the person sitting by him (after the prayer) and he used to recite between 60 to 100 Ayat (verses) of the Qur'an. He used to offer the Zuhr prayer as soon as the sun declined (at noon) and the 'Asr at a time when a man might go and return from the farthest place in Medina and find the sun still hot. (The sub-narrator forgot what was said about the Maghrib). He did not mind delaying the 'Isha prayer to one third of the night or the middle of the night." 

 Vol 1, Book No.10 Hadis No.513  from Sahih Bukhari  

Surah No.20, Taha Ayat No. 130

فَاصْبِرْ عَلَى مَا يَقُولُونَ وَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ غُرُوبِهَا وَمِنْ

    آنَاءِ اللَّيْلِ فَسَبِّحْ وَأَطْرَافَ النَّهَارِ لَعَلَّكَ تَرْضَى

Translation :


Bear patiently what they say, and celebrate the praises of your Lord before rising of sun (Fajar) and before its setting (Asar) and hours of night (Isha) and at the sides of the day “(Fajar and Maghrib)

 
Surah No. 30, Room Ayat No. 17-18


وَلَهُ الْحَمْدُ فِي السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ o فَسُبْحَانَ اللَّهِ حِينَ تُمْسُونَ وَحِينَ تُصْبِحُونَ

o وَعَشِيًّا وَحِينَ تُظْهِرُونَ

Translation :

So glorify Allah when you are in the evening ( Asar  prayer) and when you enter the morning (Fajr prayer).

And to Him all the praises and thanks in the heavens and the earth and glorify Him in the afternoon (Zohr prayer) 

VII . Qiblah for Salat (Direction of Prayer)


Surah No. 2, Al Baqr, Ayat No. 144


قَدْ نَرَى تَقَلُّبَ وَجْهِكَ فِي السَّمَاء فَلَنُوَلِّيَنَّكَ قِبْلَةً تَرْضَاهَا فَوَلِّ وَجْهَكَ شَطْرَ الْمَسْجِدِ

الْحَرَامِ وَحَيْثُ مَا كُنتُمْ فَوَلُّواْ وُجُوِهَكُمْ شَطْرَهُ وَإِنَّ الَّذِينَ أُوْتُواْ الْكِتَابَ لَيَعْلَمُونَ أَنَّهُ

o الْحَقُّ مِن رَّبِّهِمْ وَمَا اللّهُ بِغَافِلٍ عَمَّا يَعْمَلُونَ

Translation :


(O Mohammad {saws}) We have seen the turning of your face to heaven (sky) again and again. And now We are giving you that Qiblah (direction of prayer) which is dear to you. So turn your face towards the Holy Mosque of Worship, and you (O Believers), where ever you may be, turn your faces (when you pray) towards it. In fact, those who have received the Scripture know that (this revelation) is the Truth from their Lord. And Allah is not unaware of what they do.

Surah No. 2, Al Baqr, Ayat No. 149

وَمِنْ حَيْثُ خَرَجْتَ فَوَلِّ وَجْهَكَ شَطْرَ الْمَسْجِدِ الْحَرَامِ وَإِنَّهُ لَلْحَقُّ مِن

o رَّبِّكَ وَمَا اللّهُ بِغَافِلٍ عَمَّا تَعْمَلُونَ

Translation :


And from anywhere you happen to lead (for prayers), turn your face in the direction of Masjid-e-Haram (at Makkah), this is indeed the truth from your Lord. And Allah is not unaware of what you do.


Surah No. 2, Al Baqr, Ayat No. 115

o وَلِلّهِ الْمَشْرِقُ وَالْمَغْرِبُ فَأَيْنَمَا تُوَلُّواْ فَثَمَّ وَجْهُ اللّهِ إِنَّ اللّهَ وَاسِعٌ عَلِيمٌ

Translation :

To Allah belong the east and the West: Which ever direction you turn, there is the presence of Allah. For Allah is all-embracing and all-Knowing.

Comments :

In case a person is not able to find the direction of Ka'aba or if he is sick and is not able to face towards Ka'aba then he can pray in any direction.

Ahadis :

Volume 2, Book 20, Number 198: Sahi Bukhari Sharif

Narrated 'Abdullah bin 'Amir from his father who said:

I saw the Prophet (p.b.u.h) offering the prayer on his mount (Rahila) whatever direction it took.

Volume 2, Book 20, Number 199: Sahi Bukhari Sharif

Narrated Jabir bin 'Abdullah,

The Prophet used to offer the Nawafil, while riding, facing a direction other than that of the Qibla.


  VIII : Salat in Congregation
 To recite Salat ( Namaz ) in congregation

Surah No.2 , Al Baqr , Ayat No.43

o وَأَقِيمُواْ الصَّلاَةَ وَآتُواْ الزَّكَاةَ وَارْكَعُواْ مَعَ الرَّاكِعِينَ

Translation :

Establish salat and pay zakaat and bow down along with those who bow-down .


نماز کی ضرورتیں اور نماز کے مقررہ اوقات

نماز پڑھنے سے پہلے  ہر شخص کو  مندرجہ بالا ہدایتوں پر توجہ دینے کی ضرورت ہے  

I. جسم کی صفائی 

 ایک  بار جب شخص نے غسل کر لیا ، تو ، پیشاب، فضلہ،  خون یا  پیپ جیسے داغ  اس کے جسم اور کپڑے پر نہ لگیں . جب پاک ہوں تو  نماز پڑھنے سے پہلے  وضو کریں 

  وضو کا طریقہ   

سوره نمبر ٥، الماایدہ  آیت نمبر ٦  

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُواْ إِذَا قُمْتُمْ إِلَى الصَّلاةِ فاغْسِلُواْ وُجُوهَكُمْ وَأَيْدِيَكُمْ إِلَى

الْمَرَافِقِ وَامْسَحُواْ بِرُؤُوسِكُمْ وَأَرْجُلَكُمْ إِلَى الْكَعْبَينِ

.اے ایمان والوں ! جب آپ نماز کے لئے جاؤ تو اپنے چہرے دھو لیا کرو اور اپنے دونوں ہاتھ کوہنی تک دھویا کرو ، اپنے سر پر پانی سے ہاتھ پھیر لیا کرو اور اپنے دونوں پیر کے پنجے ٹخنوں تک دھو لیا کرو

 تبصرہ

جب کسی شخص کو  نماز پڑھنا  ہو یا قرآن کی تلاوت کرنا ہو تو  وضو کرنا  ضروری ہے وضو ٢٤ گھنٹے تک برقرار رہتا ہے اگر  پیشاب ،فضلہ یا ہوا خارج ہو جائے تو وضو برقرار نہیں رہتا یا گہری نیند میں چلا جاۓ 

حدیث کی معرفت سے وضو کیسے کریں

حدیث نمبر ١.١٤٢ صحیح بخاری

عطا بن یاثر ابن عباس( رضی الله ) نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو دیکھا کہ انہوں نے کس طرح وضو کیا 

رسول اللہ نے پانی سے ہاتھ دھو یا ، اس کے بعد انہوں نے چلّو بھر پانی منہ میں ڈال کر منہ کو صاف کیا کی

مٹھی بھر پانی کو ناک میں ڈال کر چنہکا ،

اس کے بعد، ایک اور مٹھی پانی لیا اور اپنا چہرہ دھویا

پھر اس کے بعد پانی سے  اپنے دائیں بازو کو  کوہنی تک دھویا. انہوں نے پھر ایک اور مٹھی پانی لیا اور اس سے بائیں بازو کو کوہنی تک دھویا

انہوں نے اس کے بعد سر پر گیلے  ہاتھ پھیرے  اس کے بعد  ایک اور مٹھی  پانی لیا اور  دائیں پاؤں کے پنجوں  کو ٹخنوں  تک  اچھی طرح دھویا اور اسی طرح ایک اور مٹھی پانی لیا اور  بائیں پاؤں کے پنجوں کو  ٹخنوں  تک  اچھی طرح دھویا

وضو کے فرض کیا ہیں 

١چہرے کا دھونا 

٢دونوں ہاتھوں کو کوہنی تک دھونا 

٣گیلے ہاتھ سے سر پر پھیرنا 

٤دونوں پیروں کے پنجوں کو ٹخنوں تک دھونا 

وضو کی سننتیں 

١الله کے نام سے وضو شروع کرنا 

٢مسواک سے دانتوں کو صاف کرنا 

٣پانی ڈالکر ناک کو چھینکنا 

٤ہر عضوکو دو یا تین بار دھونا 

 

 II            صاف اور پاک  کپڑے  پہننا   

III.    نماز کی جگہ صاف اور پاک ہو

1V. ستر کو چھپانا  

آدمیوں کو  اوپر سے اپنے جسم کو گھٹنوں سمیت ٹخنوں تک کپڑوں سے ڈھکنا اور عورتوں کو اپنے پورے جسم کو ٹخنوں سمیت ڈھکنا . صرف چہرہ کھلا رہے  

V. نماز میں احتیاتین    

ناپاکی کی حالت میں نماز نہ پڑھیں

 

سوره نمبر ٤، ان نساء آیت نمبر ٤٣ 

حَتَّىَ تَعْلَمُواْ مَا تَقُولُونَ وَلاَ جُنُبًا إِلاَّ عَابِرِي سَبِيلٍ حَتَّىَ تَغْتَسِلُو

جب تم ناپاک ہو تو نماز کے قریب نہ جاؤ یہاں تک کےغسل نہ کرلو

نماز کے دوران فرائض

قبلہ رخ کرنا 

تکبیر تحریمہ ،پہلی تکبیر الله و اکبر کہتے ہوئے

ہر رکعت میں قیام یعنی ایک جگہ پر تعینات ہونا

ہر رکعت میں قرآن کی تلاوت کرنا

ہر رکعت میں ایک رکوع اور دو سجدہ کرنا 

آخری رکعت میں قائدہ میں بیٹھنا

نماز پوری کرنے کے لئے سلام پھیرنا

نماز کے دوران واجبات

ہر رکعت میں سوره فاتحہ کے بعد ایک سوره کو یا ایک بڑی آیت کو ملانا –اگر فرض نماز کی چار رکعت ہوں تو دو رکعت میں ہی سوره ملانا اور باقی کی دو میں صرف سوره فاتحہ ہی پڑنا

ترتیب سے نماز پڑنا

رکوع کے بعد سیدھے کھڑا ہونا (قومہ) 

دو سجدوں کے درمیان سیدھے بیٹھنا  (جلسہ )

چار رکعت والی نماز میں دو رکعت کے بعد قائدا میں اتہیات پڑھنا (قائدہ اولیٰ)

وتر کی آخری رکعت میں دعا قنوت پڑھنا

نماز کے دوران کی سننتیں

تکبیر تحریمہ کے وقت آدمیوں نے  دونوں ہاتھوں کو کانوں تک اٹھانا اور عورتوں نے کندھوں تک اٹھانا

سر کو سیدھا رکھنا

ہاتھوں کو تکبیر تحریمہ کے بعد ٹھیک طرح سے باندھ لینا

سنا کا پڑھنا

ا عو ز کا پڑھنا

نماز کی قسمیں

فرض نماز   ( کفر اور اسلام میں فرق بتاتی ہے )    

واجب نماز   (ادا نہیں کرنے کی صورت میں ہر شخص گنہگار ہوتا ہے )

سنّت اور نفل ( الله کے رسول کی اقتدہ ) 

  VI نماز کے مقررہ اوقات 

قرآن نے نماز کے مختلف اوقات میں  پانچ نمازوں  کی تصدیق کی ہے. پانچ  نمازوں کے اوقات قرآن کریم کے حوالہ سے  مندرجہ ذیل ہیں

سورت نمبر 4،ان نساء ، آیت نمبر 103

إِنَّ الصَّلاَةَ كَانَتْ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ كِتَابًا مَّوْقُوتًا

مومنوں کو مقررہ اوقات پر عبادت کا حکم دیا گیا  ہے

(مقررہ وقت پر نماز پڑھنا ضروری ہے)

پانچ  نمازوں کے اوقات

سورت نمبر 2، البقر آیت نمبر 238

o حَافِظُواْ عَلَى الصَّلَوَاتِ والصَّلاَةِ الْوُسْطَى وَقُومُواْ لِلّهِ قَانِتِينَ

اپنی نماز کی باقاعدگی سے حفاظت کریں ، خاص طور پر درمیانی نماز  کی (عصر) اور نماز پر نگہبان رہیں

سوره نمبر ١١ ، ھود ،آیت نمبر١١٤  

عبادت کرو دن کے دونوں سروں پر اور رات کے چند گھنٹوں میں  (فجر، مغرب اور عشا )

سوره نمبر  ١٧  بنی اسرئیل آیت نمبر ٧٨

          وَأَقِمِ الصَّلاَةَ طَرَفَيِ النَّهَارِ وَزُلَفًا مِّنَ اللَّيْلِ إِنَّ الْحَسَنَاتِ يُذْهِبْنَ السَّـيِّئَاتِ

                 o ذَلِكَ ذِكْرَى لِلذَّاكِرِينَ

اپنی نماز کو قایم کرو جب سورج جھک جائے اور شام ہو اور قران کی تلاوت جاری رکھو صبح کی نماز میں(عصر ، مغرب اور فجر) 

 حدیث

حضرت ابن عبّاس (رضی الله) سے روایت ہے کہ شروع میں حضرت جبریل نے   نبی اکرم (صلی علیہ سلم) کو لگاتار  دو دن تک نماز پڑھائی-

پہلے دن  ظہر سورج کو ذرا جھک جانے پر  ، عصر، جب کسی بھی شے کا سایا اس کے برابر ہو ، مغرب سورج کے غروب ہوتے سے ہی ، اور عشا آسمان پر شفق کی لالی ختم ہونے پر اور فجر سورج طلوع ہونے سے پہلے

دوسرے دن حضرت جبریل نے ظہر پڑھائی جب کسی شے کا سایا اس کے برابر ہو جائے ، عصر ،جب اس شے کا سایا اس شے سے دوگنا ہو جائے ، مغرب جب سورج غروب ہو جائے، عشا جب ایک تہہائی  رات گزر جائے اور فجر جب دن کی روشنی دکھنے لگے –

( ترمذی اور ابو داود )  

ابو ال منہال : ابو دردا نے بیان کیا کہ نبی اکرم (صلی علیہ و سلم) فجر کی نماز اس وقت ادا کرتے جب پڑوس میں بیٹھا شخص دکھائی دیتا ، الله کے رسول فجر میں ٦٠ سے ١٠٠   آیتیں پڑھا کرتے تھے ،  ظہر اس وقت ادا کرتے جب سورج ذرا جھک جاتا ،  عصر اس وقت پڑھتے جب ایک شخص مدینہ سے دور کسی جگہ جاکر واپس آجاتا، انہوں نے مغرب کا ذکر نہیں کیا  ، الله کے رسول نے عشا ادا کرنے میں دیر ہونے پر اعتراض نہیں کیا  بلکہ   ادا کی جب ایک  تہہائی رات گزر جاتی  یا آدھی رات کا وقت ہو جاتا   

جلد  نمبر ١، کتاب نمبر ١٠، حدیث نمبر ٥١٣  -صحیح بخاری   

سوره نمبر ٢٠ ، تا ہا ، آیت نمبر ١٣٠

فَاصْبِرْ عَلَى مَا يَقُولُونَ وَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ غُرُوبِهَا وَمِنْ

آنَاءِ اللَّيْلِ فَسَبِّحْ وَأَطْرَافَ النَّهَارِ لَعَلَّكَ تَرْضَى

صبر کرو اپنے رب کی حمدو ثنا کے ساتھ،  اس کی تسبیح کرو سورج نکلنے سے پہلے اور سورج غروب ہونے سے پہلے اور رات کے اوقات میں بھی تسبیح کرو اور دن کے کناروں پر بھی ،شاید کہ تم راضی ہو جاؤ

 سورہ نمبر ٣٠، روم ،آیت نمبر ١٧-١٨ 
وَلَهُ الْحَمْدُ فِي السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ
 فَسُبْحَانَ اللَّهِ حِينَ تُمْسُونَ وَحِينَ تُصْبِحُونَ

     o وَعَشِيًّا وَحِينَ تُظْهِرُونَ

سوره نمبر ٢٠ ، تا ہا ، آیت نمبر ١٣٠

فَاصْبِرْ عَلَى مَا يَقُولُونَ وَسَبِّحْ بِحَمْدِ رَبِّكَ قَبْلَ طُلُوعِ الشَّمْسِ وَقَبْلَ غُرُوبِهَا وَمِنْ

آنَاءِ اللَّيْلِ فَسَبِّحْ وَأَطْرَافَ النَّهَارِ لَعَلَّكَ تَرْضَى

صبر کرو اپنے رب کی حمدو ثنا کے ساتھ،  اس کی تسبیح کرو سورج نکلنے سے پہلے اور سورج غروب ہونے سے پہلے اور رات کے اوقات میں بھی تسبیح کرو اور دن کے کناروں پر بھی ،شاید کہ تم راضی ہو جاؤ  (فجر، عصر، عشا اور فجر اور مغرب )

 سورہ نمبر ٣٠، روم ،آیت نمبر ١٧-١٨ 
وَلَهُ الْحَمْدُ فِي السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ
 فَسُبْحَانَ اللَّهِ حِينَ تُمْسُونَ وَحِينَ تُصْبِحُونَ

     o وَعَشِيًّا وَحِينَ تُظْهِرُونَ

پس تم شام اور صبح الله کے  تسبیح  کرتے ہو آسمانوں اور زمین میں اسی کے لئے حمد ہے تسبیح کرو تیسرے پہر جبکہ تم پر ظہر کا وقت آتا ہے ( عصر، فجر اور ظہر )  

VII نماز کے لئے قبلہ (یعنی رخ )

سوره نمبر ٢ ، البقر ، آیت نمبر ١٤٤  

قَدْ نَرَى تَقَلُّبَ وَجْهِكَ فِي السَّمَاء فَلَنُوَلِّيَنَّكَ قِبْلَةً تَرْضَاهَا فَوَلِّ وَجْهَكَ شَطْرَ الْمَسْجِدِ

الْحَرَامِ وَحَيْثُ مَا كُنتُمْ فَوَلُّواْ وُجُوِهَكُمْ شَطْرَهُ وَإِنَّ الَّذِينَ أُوْتُواْ الْكِتَابَ لَيَعْلَمُونَ أَنَّهُ

   الْحَقُّ مِن رَّبِّهِمْ وَمَا اللّهُ بِغَافِلٍ عَمَّا يَعْمَلُونَ 

تمہارے منہ کا بار بار آسمان کی طرف اٹھنا ہم دیکھ رہے ہیں  لو اسی قبلے کی طرف تمھیں پھیرے دیتے ہیں جسے تم پسند کرتے ہو ، مسجد حرام کے طرف رخ پھیر دو ، اب جہاں کہیں تم ہو اپنا رخ اسی کی طرف کرکے نماز پڑھا کرو  

 سورہ نمبر ٢، البقر ، آیت نمبر ١٤٩

وَمِنْ حَيْثُ خَرَجْتَ فَوَلِّ وَجْهَكَ شَطْرَ الْمَسْجِدِ الْحَرَامِ وَإِنَّهُ لَلْحَقُّ مِن

o رَّبِّكَ وَمَا اللّهُ بِغَافِلٍ عَمَّا تَعْمَلُونَ

 جب تم کسی مقام پر بھی ہو تو  وہیں سے اپنا رخ نماز پڑھنے کے لئے مسجد حرام کی طرف کر لیا کرو کیونکہ  یہ تمہارے رب کا برحق فیصلہ ہے اور الله تملوگوں کے اعمال سے بےخبر نہیں ہے

سوره نمبر ٢ ، البقر، آیت نمبر ١١٥

وَلِلّهِ الْمَشْرِقُ وَالْمَغْرِبُ فَأَيْنَمَا تُوَلُّواْ فَثَمَّ وَجْهُ اللّهِ إِنَّ اللّهَ وَاسِعٌ عَلِيمٌ

مشرق اور مغرب سب الله کے ہیں جس طرف بھی تم اپنا رخ کرلو اسی طرف الله کا رخ ہے الله بڑھی وسعت والا اور سب کچھ جاننے والا ہے   


تبصرہ

اگر کوئی شخص کعبہ کا رخ پتہ نہ کرسکے یا اگر وہ بیماری کی حالت میں ہو اور کعبہ کی طرف رخ نہ کر سکے تو وہ شخص کسی بھی طرف رخ کر کے نماز ادا کر سکتا ہے

احادیث

جلد ٢، کتاب نمبر ٢٠، حدیث نمبر ١٩٨، صحیح بخاری

ے عبدللہ بن عامر  کے والد نے فرمایا کہ انہوں نے الله کے رسول کو اونٹ کی پیٹھ پر بیٹھ کر نماز پڑھتے دیکھا وہ اونٹ کسی بھی طرف رخ کر رہا تھا

جلد ٢، کتاب نمبر ٢٠، حدیث نمبر ١٩٩ ، صحیح بخاری

جابر بن عبدللہ سے روایت ہے کہ نبی اکرم (ص) نفل نمازیں سواری پر بیٹھ کر کعبہ کا رخ کئے بنا ادا کیا کرتے تھے  


 

 VIII : نماز با جماعت

 

نماز کا باجماعت ادا کرنا

سورہ نمبر ٢، البقر، آیت نمبر ٤٣

وَأَقِيمُواْ الصَّلاَةَ وَآتُواْ الزَّكَاةَ وَارْكَعُواْ مَعَ الرَّاكِعِينَ

نماز قایم کرو اور ذکات دو  اور جو لوگ میرے آگے جھک گئے ہیں  تو تم بھی جھک  جاؤ 






If you have any feedback please revert to:  arifrk43@gmail.com